برطانیہ نے پاکستان کو تین گول سے ہرا دیا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ہاکی کی عالمی درجہ بندی میں پاکستان آٹھویں جبکہ برطانیہ چوتھے نمبر پر ہے

اولمپکس دو ہزار بارہ میں ہاکی کے ایک اہم میچ میں برطانیہ نے پاکستان کو ایک کے مقابلے میں چار گول سے شکست دے دی ہے۔

لندن کے ریور سائیڈ ایرینا میں کھیلے جانے والے میچ میں برطانیہ نے میچ کے چوتھے منٹ میں ہی جیمز ٹنڈل کے گول کی بدولت سبقت حاصل کر لی جسے چھبیسویں منٹ میں جونٹی کلارک نے دوگنا کر دیا۔

پاکستانی ٹیم کی فارورڈ لائن پہلے ہاف میں گول کرنے کی قابلِ ذکر کوشش کرنے میں ناکام رہی جبکہ دوسرے ہاف کے آغاز میں پاکستان کو یکے بعد دیگرے تین پنلٹی کارنر ملے مگر ان سے فائدہ نہ اٹھایا جا سکا۔

دوسرے ہاف میں میچ کے پچاسویں منٹ میں برطانیہ کے ایشلے جیکسن نے پنلٹی کارنر پر گول کر کے اپنی ٹیم کی برتری تین گول کر دی۔ ایشلے جیکسن نے میچ ختم ہونے سے دو منٹ قبل چوتھا اور انفرادی طور پر دوسرا گول کر کے اپنی ٹیم کی فتح یقینی بنا دی۔

پاکستان کی جانب سے میچ کا واحد گول کپتان سہیل عباس نے کھیل کے آخری لمحات میں پنلٹی کارنر پر کیا۔

اولمپکس میں اس میچ سے قبل برطانیہ اور پاکستان دس مرتبہ مدِمقابل آ چکے ہیں جن میں سے چھ پاکستان نے اور تین برطانیہ نے جیتے ہیں جبکہ ایک میچ برابر رہا۔ ہاکی کی عالمی درجہ بندی میں پاکستان اس وقت آٹھویں جبکہ برطانیہ چوتھے نمبر پر ہے۔

اس میچ سے قبل پاکستان اور برطانیہ دونوں نے اولمپکس میں اپنے دو میچوں میں سے ایک برابر کیا جبکہ ایک میں فتح حاصل کی۔

پاکستان نے اپنا پہلا میچ تیس جولائی کو سپین کے خلاف کھیلا تھا جو ایک ایک گول سے برابر رہا تھا۔دوسرے میچ میں پاکستان نے ارجنٹائن کو صفر کے مقابلے میں دو گول سے شکست دی تھی۔

برطانیہ نے بھی اب تک دو میچ کھیلے ہیں۔ پہلے میچ میں برطانیہ نے ارجنٹائن کو ایک کے مقابلے میں تین گول سے شکست دی تھی جبکہ جنوبی افریقہ سے اس کا میچ دو دو گول سے برابر رہا تھا۔

پاکستانی ٹیم سنہ انیس سو بانوے کے بعد اولمپکس میں ہاکی کے مقابلوں میں وکٹری سٹینڈ پر پہنچنے میں ناکام رہی ہے۔ انیس سو بانوے کے بارسلونا اولمپکس میں شہباز احمد سینیئر کی قیادت میں کانسی کا تمغہ حاصل کیا تھا۔

اسی بارے میں