کیون پیٹرسن انڈیا کے دورے سے بھی باہر

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 ستمبر 2012 ,‭ 13:44 GMT 18:44 PST

کیون پیٹرسن نے جنوبی افریقہ کے کھلاڑیوں کو اپنی ٹیم کے کھلاڑیوں کے بارے میں ٹیکسٹ میسجز بھیجے تھے

انگلینڈ کےسلیکٹروں نے انڈیا کے دورے کے لیے انگلش ٹیم کا چناؤ مکمل کر لیا ہے لیکن اس ٹیم میں ممتاز بیٹسمین کیون پیٹرسن کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔

جنوبی افریقہ میں پیدا ہونے والے کیون پیٹرسن کو گزشتہ ماہ اس وقت ٹیم سے نکال دیا تھا جب انہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف میچ کے دوران جنوبی افریقہ کی ٹیم کے کھلاڑیوں کو اپنی ٹیم اور بالخصوص کپتان اینڈریو سٹراس کے بارے میں ’اشتعال آمیز‘ ٹیکسٹ میسجز بھیجے تھے۔

انگلش سلیکٹروں نے جنوبی افریقہ میں پیدا ہونے والےنک کرامپٹن کو ٹیم میں شامل کیا ہے۔ نک کرامپٹن انگلینڈ کے ماضی کے عظیم کھلاڑی ڈینس کرامپٹن کے پوتے ہیں۔ اکیس سالہ بیٹسمین جو روٹ کو بھی پہلی بار ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

پاکستان کےخلاف ٹیسٹ سیریز کے دوران غیر معیاری کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ایون مورگن کو دوبارہ ٹیسٹ ٹیم میں جگہ ملی ہے۔ روی بوپارہ کو ٹیم میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

سولہ رکنی ٹیم میں میٹ پرائر واحد وکٹ کیپر ہیں اور ضرورت پڑنے کی صورت میں جانی بیرسٹو کو وکٹ کیپر کے فرائض سونپے جا سکتے ہیں۔

چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا پہلا میچ پندرہ نومبر سے احمد آباد میں شروع ہوگا۔

اینڈریو سٹراس کی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد ایلسٹر کک پہلی مرتبہ ٹیسٹ ٹیم کی کپتانی کریں گے۔

کیون پیٹرسن نے انڈیا کےدورے کے لیے ٹیم میں جگہ نہ ملنے پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ کیون پیٹرسن کو آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔ پچھلے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں انگلینڈ نے فتح حاصل کی تھی اور کیون پیٹرسن نے اوپنر کے طور پر انتہائی عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا۔

کیون پیٹرسن کو ٹیم سے ڈراپ کیے جانے کے بعد ان کے کرکٹ بورڈ کے عہدیداروں سے مذاکرات ہوئے ہیں لیکن معاملات طے نہیں پا سکے۔

انگلینڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر ہوگ مورس نے کہا ہے کہ کیون پیٹرسن اور بورڈ کے درمیان ہونے والی گفتگو ’خفیہ‘ تھی اور خفیہ ہی رہے گی۔

بی بی سی کے کرکٹ نامہ نگار جوناتھن ایگنیو نے کہا ہے کہ وہ سمجھتے ہیں کہ انگلش سلیکٹروں نے کیون پیٹرسن سے کہا ہے کہ وہ جائیں اور ان تمام معاملات پر غور کرو جس کی وجہ سے انہیں ٹیم میں جگہ نہیں دی گئی ہے۔

جوناتھن ایگنیو سمجھتے ہیں کہ انگلش کرکٹ کے حکام چاہتے ہیں کہ اگر کیون پیٹرسن انگلینڈ کے لیے کھیلنے میں دلچسپی رکھتے ہیں تو انہیں ثابت کرنا ہوگا کہ وہ انگلینڈ کو اہمیت دیتے ہیں۔

انگلینڈ کی ٹیسٹ ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہو گی: ایلسٹر کک (کپتان) نک کرامپٹن، جو روٹ، جوناتھن ٹراٹ، این بیل، ایون مورگن، جانی بیرسٹو، میٹ پرائر (وکٹ کیپر)، جیمز اینڈرسن، ٹم بریسنن، سٹیوراٹ براڈ، سٹیو فن، گراہم اونین، گریم سوان، مونٹی پنیسر اور سمت پیٹل۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔