پاکستان اور بنگلہ دیش آمنے سامنے

آخری وقت اشاعت:  پير 24 ستمبر 2012 ,‭ 11:20 GMT 16:20 PST
نیوزی لینڈ اور بنگلہ دیش کے کپتان

نیوزی لینڈ سپر ایٹ میں پہنچ چکی ہے لیکن بنگلہ دیش کا پہنچنا کم از کم چھتیس رنز سے جیتنے پر مشروط ہے

آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے سپر ایٹ میں پہنچنے والی آٹھویں اور آخری ٹیم کونسی ہوگی اس کا فیصلہ منگل کو پاکستان اور بنگلہ دیش کے میچ سے ہوجائے گا۔

بنگلہ دیش کو اگلے مرحلے تک رسائی کے لیے کم از کم چھتیس رنز سے جیتنا ہوگا جب کہ پاکستان کو صرف جیت سپر ایٹ میں پہنچادے گی۔

اس گروپ سے نیوزی لینڈ کی ٹیم بہتر رن ریٹ کی وجہ سے ہی سپر ایٹ میں جگہ بنا چکی ہے۔

نیوزی لینڈ نے پہلے میچ میں بنگلہ دیش کو انسٹھ رنز سے شکست دی تھی لیکن پاکستان کے خلاف اسے تیرہ رنز سے ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم کا اس ٹورنامنٹ میں آغاز پُراعتماد رہا لیکن انہیں امید ہے کہ فاسٹ بولرز سہیل تنویر اور عمرگل اپنی بولنگ میں بہتری لائیں گے اور پلان کے مطابق بولنگ کریں گے۔

یہ دونوں بولرز پاکستان کے پہلے میچ میں کافی مہنگے ثابت ہوئے تھے خصوصاً اٹھارہویں اوور میں سہیل تنویر نے تیرہ رنز دیے اور اُس سے اگلے اوور میں عمرگل نے پندرہ رنز دیے۔ خوش قسمتی سے انہیں اس اوور میں مک کلم کی وکٹ مل گئی جس سے پاکستانی کھلاڑیوں کی جان میں جان آئی۔

محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ وہ خود کو خوش قسمت کپتان سمجھتے ہیں جس کے پاس ایک زبردست بولنگ اٹیک ہے۔ سعید اجمل اور شاہد آفریدی بہت ہی عمدہ بولنگ کر رہے ہیں جبکہ وہ خود کفایتی بولر ہیں جو رنز روکنے میں کامیاب رہے ہیں۔

واضح رہے کہ نیوزی لینڈ کے خلاف میچ میں حفیظ نے تینتالیس رنز بنانے کے علاوہ چار اوورز میں صرف پندرہ رنز دیے تھے۔

"پاکستانی ٹیم ناقابل تسخیر نہیں ہے "

بنگلہ دیشی کپتان مشفیق الرحیم

بنگلہ دیشی کپتان مشفق الرحیم کا کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم ناقابل تسخیر نہیں ہے اور انہیں امید ہے کہ ان کےکھلاڑی اس اہم ترین میچ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ یقیناً پاکستانی بولنگ ورلڈ کلاس ہے لیکن ان کے بلے باز انہیں کھیلنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

مشفق الرحیم نے تسلیم کیا کہ نیوزی لینڈ کے خلاف میچ میں انہوں نے وکٹ کو سمجھنے میں غلطی کی اور تین لیفٹ آرم سِپنرز کھلاتے ہوئے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔

آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں بنگلہ دیشی ٹیم کا ریکارڈ خاصا مایوس کن رہا ہے اور دو ہزار سات کے عالمی مقابلے میں ویسٹ انڈیز کو شکست دینے کے بعد سے اب تک وہ مسلسل نو میچز ہار چکی ہے۔

پاکستان اور بنگلہ دیش کے درمیان پانچ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز کھیلے جاچکے ہیں اور پاکستان کی جیت کا تناسب سو فیصد رہا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔