’جنوبی افریقہ کے خلاف جیت ضروری تھی‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 28 ستمبر 2012 ,‭ 16:47 GMT 21:47 PST

عمرگل کے لیے نیوزی لینڈ اور بنگلہ دیش کے خلاف میچز بھیانک خواب ثابت ہوئے تھے اور جنوبی افریقہ کے خلاف میچ سے قبل یہی سوال سب کے ذہنوں میں تھا کہ کیا اس بار حالات ان کے لیے پہلے سے بہتر ہونگے یا نہیں؟۔

سپنرز کی غیرمعمولی کاررکردگی کے سبب محمد حفیظ کو عمرگل کی ضرورت اس وقت پیش آئی جب جنوبی افریقہ کے تین اوورز باقی تھے اور وہ اپنے دو اوورز میں انیس رنز دے کر اے بی ڈی ویلیئرز کی وکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے لیکن کسے پتہ تھا کہ اس میچ میں عمرگل کا کردار ابھی ختم نہیں ہوا اور بیٹنگ میں بتیس انتہائی قیمتی رنز بناکر پاکستان کو ایک ایسی جیت سے ہمکنار کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے جو ٹاپ آرڈر بیٹنگ کی انتہائی غیرذمہ داری کے نتیجے میں تقریباً شکست میں بدل چکی تھی۔

عمرگل کہتے ہیں کہ کرکٹ میں ہر کرکٹر کا کنٹری بیوشن بہت ضروری ہے وہ چاہے بالنگ میں ہو یا بیٹنگ میں۔

"جنوبی افریقہ کے خلاف جیت پاکستان کے لیے بہت ضروری تھی کیونکہ شکست کی صورت میں بقیہ دونوں میچوں میں ٹیم پر دباؤ آجاتا۔ کولمبو کی کنڈیشنز پاکستانی ٹیم کے لیے موافق ہیں اور ٹیم بھارت کے خلاف اچھی کاررکردگی کی پوری کوشش کرے گی۔"

عمرگل

نیٹ پریکٹس میں کوچ ڈیو واٹمور بالرز کو بلے بازوں سے پہلے بیٹنگ کراتے ہیں تاکہ وقت آنے پر بالرز بھی بیٹنگ میں کچھ کرسکیں تاہم وہ اس ضمن میں اسسٹنٹ کوچ شاہد اسلم کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے بیٹنگ کی انہیں بہت زیادہ پریکٹس کرائی اور انہوں نے جو اننگز کھیلی اس میں شاہد اسلم کی محنت بھی شامل ہے۔

عمرگل کو اس بات کا بخوبی احساس ہے کہ نیوزی لینڈ اور بنگلہ دیش کے خلاف میچز میں ان کی بالنگ اچھی نہیں رہی لیکن وہ کہتے ہیں کہ اس صورت حال نے انہیں مایوس نہیں کیا تھا اور وہ جنوبی افریقہ کے خلاف میچ سے قبل کسی بھی قسم کا دباؤ محسوس نہیں کر رہے تھے بلکہ وہ مستقل محنت کر رہے ہیں اور کوشش کر رہے ہیں کہ جو بھی خامی ہے اسے دور کریں کیونکہ وہ مثبت سوچ کے حامل کرکٹر ہیں اور پریشان نہیں ہوتے بلکہ اپنی غلطیوں کو دور کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔

عمرگل کا کہنا ہے کہ جنوبی افریقہ کے خلاف جیت پاکستان کے لیے بہت ضروری تھی کیونکہ شکست کی صورت میں بقیہ دونوں میچوں میں ٹیم پر دباؤ آجاتا۔ کولمبو کی کنڈیشنز پاکستانی ٹیم کے لیے موافق ہیں اور ٹیم بھارت کے خلاف اچھی کاررکردگی کی پوری کوشش کرے گی۔

عمرگل کہتے ہیں کہ بھارت کے خلاف میچ پریشرگیم ہوتا ہے اس کی وجہ یہ ہے کہ پوری قوم کی بہت زیادہ توقعات ٹیم سے وابستہ ہوتی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔