چوہتر رنز سے فتح، ویسٹ انڈیز فائنل میں

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 5 اکتوبر 2012 ,‭ 14:27 GMT 19:27 PST

کرس گیل مکمل طور پر فٹ نہیں تھے لیکن پھر بھی انہوں نے دھواں دھار بلے بازی کی

سری لنکا کے شہر کولمبو میں ورلڈ ٹی ٹوئنٹی مقابلوں کے دوسرے سیمی فائنل میں ویسٹ انڈیز نے آسٹریلیا کو چوہتر رن سے شکست دے کر اتوار کو ہونے والے فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے جس میں اس کا مقابلہ سری لنکا سے ہو گا۔

ٹاس جیت کر پہلے کھیلتے ہوئے ویسٹ انڈیز نے زبردست بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئےمقررہ بیس اوور میں دو سو پانچ رن بنائے۔

کلِک میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

جواب میں آسٹریلیا کا آغاز ہی اچھا نہ ہو سکا اور میچ کی دوسری گیند پر وارنر آؤٹ ہوگئے۔ آسٹریلیا کی مشکلات یہیں ختم نہیں ہوئیں اور مائیک ہسی کی وکٹ بھی جلد ہی گر گئی۔ آسٹریلیا کا سکور جب چار اوور میں انتیس رنز پر پہنچا تو ان کی آخری امید واٹس بھی آوٹ ہو گئے۔

آسٹریلیا کی چوتھی وکٹ بیالیس کے سکور پر گری جب وائٹ آوٹ ہوئے وہ رام پال کی گیند پر وکٹ کے پیچھے کیچ ہوئے۔ رام پال نے اگلی ہی گیند پر ڈویڈ ہسی کو بھی آؤٹ کر دیا اور اس طرح صرف بیالیس کے سکور پر آسٹریلیا کے پانچ کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے۔

ساتویں اوور میں صرف ایک رن کے اضافے کے بعد آسٹریلیا کی اگلی وکٹ گری جب ویڈ آؤٹ ہو گئے۔ اس کے بعد آسٹریلیا کے کپتان جارج بیلی نے جارحانہ انداز اختیار کیا اور ایک اوور میں اکیس رن سکور کیے۔ بیلی نے انتیس گیندوں پر تریسٹھ رن بنائے۔

آسٹریلیا کی پوری ٹیم سولہ اعشاریہ چار اوور میں ایک سو اکتیس رن بنا کر آوٹ ہو گئی۔

اس سے قبل ویسٹ انڈیز کی اننگز کا آخری اوور سب سے دلچسپ رہا جس میں آسٹریلیا کے گیند باز ڈورتھی کو پچیس رنز پڑے۔ کرس گیل نے ڈورتھی کی پہلی گیند پر چھکا لگایا اور پھر ایک رن بنا لیا۔ ایک رن بننے سے پولارڈ سامنے آ گئے اور انھوں نے اگلی تین گیندوں پر زبردست چھکے مارے۔ میچ کی آخری گیند پر وہ کیچ آؤٹ ہو گئے لیکن اس وقت تک وہ اپنا کام کر چکے تھے۔

اس ٹورنامنٹ میں یہ سکور کسی بھی ٹیم کے خلاف بننے والا سب سے بڑا سکور تھا۔

کرس گیل مکمل طور پر فٹ نہیں تھے لیکن پھر بھی انہوں نے دھواں دھار بلے بازی کی۔ انہوں نے چھ چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے اکتالیس گیندوں پر پچھہتر رن بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔ کرس گیل کا ایک چھکا ایک سو دو میٹر پر گرا جو اب تک اس ٹورنامنٹ میں سب سے بڑا چھکا تھا۔

پولارڈ نے پندرہ گیندوں پر اڑتیس رنز بنائے۔اس میں تین چوکے اور تین چھکے لگائے۔

اس میچ میں ڈورتھی آسٹریلیا کے سب سے مہنگے بالر ثابت ہوئے۔ انہوں نے تین اوورز میں اڑتیس رنز دیئے۔

اس میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا تھا۔

ویسٹ انڈیز نے اپنی اننگز کا آغاز نسبتاً کم جارحانہ انداز میں کیا اور پہلے چھ اوورز میں چھیالیس سکور بنائے اور اس کا ایک کھلاڑی آؤٹ ہوا۔

پاور پلے کے بعد بھی ویسٹ انڈیز نے جارحانہ شاٹس کھیلنے کا سلسلہ جاری رکھا اور دس اوور میں پچہتر رنز بنائے۔

ویسٹ انڈیز کے پہلے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی جانسن چارلس تھے جو وکٹ کے پیچھے کیچ آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے تیرہ گیندوں پر صرف دس رنز بنائے۔

سیموئیل آوٹ ہونے والے دوسرے کھلاڑی تھے اور انہوں نے بیس گیندوں میں چھبیس رنز بنائے۔ وہ نوجوان بالر کمنز کی گیند پر بولڈ ہوئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔