دکن چارجرز کی جگہ نئی ٹیم کے لیے ٹینڈر

آخری وقت اشاعت:  اتوار 14 اکتوبر 2012 ,‭ 16:53 GMT 21:53 PST
ٹنڈر بی سی سی آئی

بی سی سی آئی نے دکن چارجرز کی جگہ نئی ٹیم کے لیے اشتہار دیا ہے۔

ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ یعنی بی سی سی آئی نے انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں نئی ٹیم شامل کرنے کے لیے ٹینڈر طلب کر لیے ہیں۔

اس طرح کہا جا رہا ہے کہ دکن چارجرز کی جگہ آئی پی ایل میں نئی ٹیم شامل کرنے کا عمل شروع ہو چکا ہے۔

بی سی سی آئی نے گزشتہ ماہ دکن چارجرز کو فیس ادا نہ کرنے کے الزام میں آئی پی ایل سے باہر کر دیا تھا۔

دکن چارجرز کے مالک نے اس فیصلے کو ممبئی ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا جس پر انہیں کچھ دنوں کی مہلت بھی ملی تھی مگر آخر کار سنیچر کو بی سی سی آئی نے ایک بیان جاری کرکے دکن چارجرز کو آئی پی ایل سے الگ کرنے کی تصدیق کر دی۔

اس کے بعد بی سی سی آئی نے اتوار کو ہی اخباروں میں اشتہار جاری کر دیے۔

بی سی سی آئی کے سیکرٹری سنجے جگدلے نے بارہ شہروں کے نام اشتہار میں کہا ہے کہ اس ٹینڈر کے تحت جس کی بولی سب سے زیادہ ہوگی اسے دو ہزار تیرہ سے آئی پی ایل میں حصہ لینے والی نئی ٹیم کا مالکانہ حق دیا جائے گا۔

اشتہار میں کہا گیا ہے کہ نئی ٹیم حیدرآباد سمیت بارہ شہروں میں سے کسی ایک شہر کو اپنا شہر بنا سکتی ہے۔دکن چارجرز حیدر آباد کی ٹیم تھی اور اس کی ٹیم نے دو ہزار نو میں چیمپئن شپ جیتی بھی تھی۔

بارہ شہروں میں احمد آباد، کٹک، دھرم شالہ، اندور، حیدر آباد، کانپور، كوچي، ناگپور، نوئیڈا، راجکوٹ، رانچی اور وائزاگ شامل ہیں۔

دکن چارجرز کی کپتانی کمار سنگاکارا کر چکے ہیں اور جنوبی افریقی تیز گیند باز ڈیل اسٹین بھی اس ٹیم میں ہیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ سال بی سی سی آئی نے كوچي ٹیم کو بھی آئی پی ایل سے الگ کر دیا تھا کیونکہ وہ پوری رقم ادا نہیں کر پائی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔