ٹی ٹوئنٹی: ورلڈ الیون کو چوراسی رنز سے شکست

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 20 اکتوبر 2012 ,‭ 16:48 GMT 21:48 PST

سنتھ جے سوریا کی قیادت میں انٹرنیشنل الیون کو ہفتے کے روز پاکستان آل سٹار الیون کے خلاف پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں چوراسی رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

مارچ دو ہزار نو میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر لاہور میں ہونے والے حملے کے بعد پاکستان میں کسی بھی غیرملکی کرکٹ ٹیم کا یہ پہلا میچ تھا جسے دیکھنے کے لیے نیشنل سٹیڈیم کراچی میں شائقین کی بڑی تعداد موجود تھی جو طویل اور صبرآزما انتظار کے بعد اپنے سامنے ملکی اور غیرملکی کرکٹرز کو کھیلتا دیکھ کر بہت خوش تھی۔

میچ کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے تھے۔

پاکستان آل سٹار کے کپتان شاہد آفریدی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

پاکستان آل سٹار الیون نے مقررہ اوورز میں سات وکٹوں پر دو سو بائیس رنز سکور کیے۔

عمراکمل نے سڑسٹھ رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے اور ان کی سنتیس گیندوں کی اننگز میں تین چھکے اور سات چوکے شامل تھے۔

شاہ زیب حسن نے چھ چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے چون رنز بنائے۔

شاہد آفریدی سات گیندوں پر دو چھکوں اور ایک چوکے کی مدد سے اٹھارہ رنز بنا سکے۔

جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے شبا لالا نے تین وکٹیں حاصل کیں۔

کراچی سے نامہ نگار کے مطابق انٹرنیشنل الیون کے تمام ہی کرکٹرز اب انٹرنیشنل کرکٹ نہیں کھیل رہے ہیں اور پریکٹس میں نہ ہونے کے سبب فیلڈنگ میں ان کی کمزوری کھل کر سامنے آئی اور انہوں نے کئی آسان کیچز ڈراپ کیے۔

انٹرنیشنل الیون آٹھ وکٹوں پر ایک سو اڑتیس رنز بنا سکی۔شاہ پور زدران نے بیالیس رنز سکور لیے ۔سنتھ جے سوریا صرف دس رنز بنا سکے۔

تابش خان نے لگاتار گیندوں پر رکارڈو پاول، لاسن اور شبالالا کو آؤٹ کر کے ہیٹ ٹرک کی۔

انہوں نے چار اوورز میں پچیس اوورز کے عوض تین وکٹیں حاصل کیں۔

دونوں ٹیموں کے درمیان دوسرا ٹی ٹوئنٹی میچ اتوار کو نیشنل سٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔

ان میچوں کا اہتمام سندھ کے وزیر کھیل ڈاکٹر محمد علی شاہ نے کیا ہے اور اس کا مقصد پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی ہے۔

ڈاکٹر محمد علی شاہ گزشتہ سال عالمی الیون کے کراچی میں میچز کا انعقاد چاہتے تھے لیکن اس وقت پاکستان کرکٹ بورڈ نے انہیں اس کی اجازت نہیں دی تھی اس بار بھی پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان میچز کے لیے صرف سٹیڈیم کی سہولت فراہم کی ہے اور بقیہ تمام انتظامات ڈاکٹر محمد علی شاہ خود سندھ کی حکومت کے تعاون سے کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کے ضمن میں عالمی الیون کے یہ دو میچز مثبت کردار ادا کریں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔