فیڈرر اے ٹی پی ورلڈ ٹور کے فائنل میں

آخری وقت اشاعت:  پير 12 نومبر 2012 ,‭ 03:48 GMT 08:48 PST

یہ روجر فیڈرر اور اینڈی مرے کے درمیان لندن ہی میں تیسرا مقابلہ ہے۔

روجر فیڈرر نے اے ٹی پی ورلڈ ٹور کے سیمی فائنل میں برطانیہ کہ اینڈی مرے کو ہرا کر فائنل کے لیے کولیفائی کر لیا ہے۔

فیڈرر سوموار کو فائنل میں عالمی نمبر ایک نواک جوکووچ کا مقابلہ کریں گے۔

لندن کے او ٹو ارینا میں کھیلے گئے اس مقابلے میں فیڈرر نے مرے کو سات چھ، سات پانچ اور چھ دو سے شکست دی۔

بلاشبہ یہ مرے کا بہترین ٹینس سیزن تھا جس کا اختتام فیڈرر سے شکست کے بعد کچھ اچھا نہیں ہوا۔

اس سیزن میں مرے نے یو ایس اوپن اور اولمپکس میں گولڈ میڈل جیتا تھا۔

مرے نے کہا کہ ان کے مدمقابل نے اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا اور انہوں نے اپنے کھیل کے بارے میں کہا کہ وہ اتنے اچھے معیار کا کھیل نہیں پیش کر سکے۔

مرے نے فیڈرر کے کھیل کے بارے میں کہا ’ایک بار جب وہ آگے نکل جائیں تو ان کو روکنا محال ہو جاتا ہے اور وہ جب برتری حاصل کرتے ہیں تو بہتر کھیل پیش کرتے ہیں اور میں سمجھتا ہوں کہ میں نے ان کو کھیل کے ابتدا ہی میں سبقت دے دی تھی۔‘

مرے نے اپنے سال کے بارے میں کہا کہ ’میرا یہ سال ایک بہت مثبت سال تھا اور مجھے بہت اچھا لگتا اگر میں سال کا اختتام بھی ایک جیت پر کرتا لیکن ایسا نہیں ہوا لیکن پھر بھی ہر لحاظ سے میرے کیرئیر کا یہ سب سے بہترین سال تھا۔‘

مرے نے اس مقابلے کا آغاز بہتر انداز میں کیا مگر وہ اس کو زیادہ دیر تک برقرار نہ رکھ سکے۔

او ٹو ارینا میں مقابلہ سترہ ہزار آٹھ سو شائقین نے دیکھا جس میں فیڈرر کے مداحوں کی ایک بہت بڑی تعداد شامل تھی۔

فیڈرر نے مقابلہ جیتنے کے بعد کہا ’یہ ہم دونوں کے درمیان لندن میں تیسرا مقابلہ تھا اور مداحوں کا انداز بہت بھرپور تھا جس سے انہیں بہت تقویت ملی۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔