ویسٹ انڈیزکی دو صفر سے جیت

آخری وقت اشاعت:  اتوار 25 نومبر 2012 ,‭ 07:42 GMT 12:42 PST
ویسٹ انڈیز

بنگلہ دیش کے شہر کھلنا میں ویسٹ انڈیز اور بنگلہ دیش کے درمیان جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے آخری روز لنچ سے قبل ہی ویسٹ انڈیز نے دس وکٹوں سے میچ جیت لیا۔

ویسٹ انڈیز نے جیت کے لیے ستائیس رنز کا مطلوبہ ہدف چار اعشاریہ چار گیندوں میں حاصل کر لیا۔ اس طرح ویسٹ انڈیز نے دو میچوں کی سیریز دو صفر سے جیت لی ہے۔ اس سے قبل پہلے میچ میں ویسٹ انڈیز نے ستتر رنز سے جیت حاصل کی تھی۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے ٹینو بیسٹ نے بہترین بالنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے چالیس رنز کے عوض چھ وکٹ لیے۔ انھوں آج بنگلہ دیش کے گرنے والی چار وکٹوں میں سے تین وکٹ حاصل کیے۔

کلِک میـچ کامکمل سکور جاننے کے لیے کلک کریں

ناصر حسین اور شکیب الحسن نے بنگلہ دیش کو اننگز کی ہار سے تو بچا لیا لیکن دونوں اپنی اپنی سنچری مکمل نہ کر سکے۔ شکیب نے چوتھے روز آخری گیند پر جارحانہ شاٹ کھیلنے کی خواہش میں ستانوے رنز پر اپنی وکٹ گنوا دی تھی اور آج صبح ناصر حسین چورانوے رنز پر بیسٹ کا شکار ہو گئے۔

چندر پال

چندر پال نے پہلے ٹیسٹ میں ڈبل سنچری اور دوسرے میں سنچری بنائی۔

میچ میں بہترین کار کردگی کے لیے میرلن سیموئلس کو مین آف دی میچ کے اعزاز سے نوازا گیا جبکہ شیونارائن چندر پال کو سیریز میں بہتر کار کردگی کے لیے مین آف دی سیریز دیا گیا۔

اب ویسٹ انڈیز اپنے بنگلہ دیش کے دورے میں پانچ ایک روزہ اور ایک ٹوئنٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے گی۔ ایک روزہ میچ تیس نومبر سے شروع ہو رہے ہیں۔

چوتھے دن شکیب الحسن نے جارحانہ انداز میں بلے بازی کرتے ہوئے ستانوے رنز بنائے اور چوتھے دن کھیل کے آخری اوور میں پرمال کی گیند پر آؤٹ ہو گئے۔ ان کے آوٹ ہونے کے ساتھ ہی چوتھے دن کے کھیل کے خاتمے کا اعلان کر دیا گیا۔

اس سے قبل ویسٹ انڈیز نے اپنی پہلی اننگز میں چار وکٹ کے نقصان پر پانچ سو چونسٹھ رنز سے آ گے کھیلنا شروع کیا اور جب چندر پال کے ایک سو پچاس رنز پورے ہوئے تو ویسٹ انڈیز نے اپنی اننگز کے خاتمے کا اعلان کر دیا۔

تیسرے دن شکیب الحسن کو کوئی وکٹ نہیں مل سکی تھی لیکن چوتھے دن گرنے والے چاروں وکٹیں ان ہی کے حصے میں آئیں۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے میرن سیموئلس نے تیسرے دن اپنی ڈبل سنچری مکمل کی جو کہ ان کی پہلی ڈبل سنچری ہے۔ وہ چائے کے وقفے کے بعد دو سو ساٹھ رنز بناکر روبیل حسین کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

ابوالحسن

ابوالحسن نے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میچ میں نیا ریکارڈ قائم کیا

میچ کے دوسرے دن بنگلہ دیش کی پوری ٹیم تین سو ستاسی رنز بناکر آؤٹ ہو گئی تھی اور بنگلہ دیش اننگز کی خاص بات ابوالحسن کی سنچری تھی۔

ابوالحسن نے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میچ میں دسویں نمبر پر بلے بازی کا ریکارڈ قائم کیا ہے۔

ٹیسٹ کرکٹ کی ایک سو پینتیس سالہ تاریخ میں وہ دوسرے ایسے کھلاڑی ہیں جنھوں نے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میں دسویں نمبر پر بلے بازی کرتے ہوئے سنچری سکور کی ہے۔

اس سے قبل سنہ انیس سو دو میں آسٹریلیا کے ریگل ڈف نے یہ کارنامہ سرانجام دیا تھا۔

اس سے قبل بنگلہ دیش نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

بنگلہ دیش کی شروعات اچھی نہیں رہی اور ایک سو ترانوے رنز پر ان کے آٹھ کھلاڑی آؤٹ ہو چکے تھے۔ پھر محمداللہ کے ساتھ ابوالحسن نے ایک سو چوراسی رنز کی شراکت داری قائم کی۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے فیڈل ایڈوارڈ نے شاندار بالنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے نوے رنز کے عوض چھ کھلاڑی آؤٹ کیے۔

اس کے علاوہ کپتان ڈیرن سیمی اور ویرا سیمی پرمال نے بالترتیب تین اور ایک وکٹ حاصل کی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔