’پاکستان میں سکیورٹی صورتحال پر تشویش ہے‘

آخری وقت اشاعت:  پير 31 دسمبر 2012 ,‭ 09:33 GMT 14:33 PST

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے اعلان کیا ہے کہ پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال بہتر ہونے پر ہی بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم وہاں کا دورہ کرے گی۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے سربراہ ناظم الحسن نے ڈھاکہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ’بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم فی الحال پاکستان کا دورہ نہیں کرے گی۔ یہ فیصلہ پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال کو مدِ نظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں سکیورٹی صورتحال کو دیکھتے ہوئے اور اپنے کھلاڑیوں کی سکیورٹی کو دیکھتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

معروف کرکٹ ویب سائٹ کرک انفو کے مطابق بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے سربراہ نے کہا ’آئی سی سی میں ہم نے پاکستان کا دورہ کرنے کی غیر مشروط ہامی بھری تھی۔ لیکن ہمیں پاکستان کی سکیورٹی صورتحال پر تشویش ہے۔ سکیورٹی صورتحال درحقیقت مزید خراب ہو گئی ہے۔‘

انہوں نے مزید کہا ’ہمارے خیال میں اس وقت پاکستان کا دورہ کرنا دانشمندانہ فیصلہ نہیں ہوگا۔‘

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے سربراہ ناظم الحسن نے کہا کہ انہوں نے تین دن قبل پاکستان کرکٹ بورڈ کو اپنے خدشات کے حوالے سے خط ارسال کر دیا ہے۔

’ہم پی سی بی سے دوبارہ اس وقت رابطہ کریں گے جب ملک کی سکیورٹی صورتحال بہتر ہو جائے گی۔ اور ہم مستقبل میں پاکستان کا دورہ کریں گے کیونکہ ہم نے ہامی بھری ہوئی ہے۔‘

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے سربراہ نے مزید کہا کہ وہ اپنے فیصلے کے نتائج سے واقف ہیں۔ ’پاکستان شاید بنگلہ دیش پریمیئر لیگ اور ڈھاکہ لیگز کے لیے اپنے کھلاڑی نہ بھیجیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ شاید ہماری مدد اور حمایت بھی نہ کرے۔‘

یاد رہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کو جنوری میں پاکستان کا دورہ کرنا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔