آرمسٹرونگ کے خلاف قانونی چارہ جوئی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 20 جنوری 2013 ,‭ 14:18 GMT 19:18 PST
لانس آرمسٹرونگ

ماضی میں لانس آرمسٹرانگ نے ڈوپنگ کے الزامات کو ہمیشہ غلط قرار دیا تھا

امریکہ کی ایک انشورنس کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ سائیکلسٹ لانس آرمسٹرونگ کو ادا کی گئي اپنی خطیر رقم واپس لینے کے لیے ان پر مقدمہ کرے گي۔

ٹیکساس کی ایک بیمہ کمپنی ایس سی اے کا کہنا ہے اگر آرمسٹرونگ کی کمپنی کی جانب سے انہیں اطمینان بخش جواب نہ ملا تو وہ اگلے ہی ہفتے ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر کا مقدمہ دائر کرے گی۔

امریکی سائیکلسٹ لانس آرمسٹرونگ نے چند روز قبل ہی پہلی بار عوامی سطح پر ممنوعہ ادویات کے استعمال کا اعتراف کیا تھا۔

انہوں نے ٹور ڈی فرانس سائیکل ریس میں اپنی سات فتوحات کو انہیں ادویات کا مرہونِ منت قرار دیا اور کہا کہ ان کے بغیر وہ یہ کامیابیاں حاصل نہیں کر سکتے تھے۔

ممنوعہ ادویات کے استعمال کے الزام پر اکتالیس سالہ آرمسٹرونگ سے ان سے تمام اعزازات واپس لے لیے گئے ہیں۔

بیمہ کمپنی ایس سی اے پروموشن نے لانس آرمسٹرونگ کے بونس کابیمہ کیا تھا اور جب انہوں نے ٹور ڈی فرانس میں چوتھی، پانچویں اور چھٹی بار کامیابی حاصل کی تو انہیں پچاس کروڑ ڈالر ادا کیے تھے۔

ایس سی اے کمپنی کے وکیل جیف ٹلیسٹون نے کہا ’اگر ہمیں آرمسٹرونگ کی طرف سے اطمینان بخش جواب نہیں ملا تو ہم اگلے ہفتے تک ہی مقدمہ دائرکر دیں گے۔‘

آرمسٹرونگ کا بیمہ ایک سپورٹس کمپنی نے کروایا تھا لیکن بیمہ کمپنی نے چھٹے ٹور ڈی فرانس کے لیے یہ کہہ کر پچاس لاکھ ڈالر کی رقم ادا نہیں کی تھی کہ آرمسٹرونگ مشکوک سائیکلسٹ ہیں۔

لیکن آرمسٹرونگ نے اس پر کمپنی کے خلاف مقدمہ دائر کردیا تھا اور چونکہ معاہدہ یہ تھا کہ اگر سرکاری سطح پر وہ ٹور کے فاتح قرار دیےگئے تو انہیں یہ رقم دینی پڑیگی اس لیے عدالت نے کمپنی کو رقم کی ادائیگي کا حکم دیا تھا۔

"آپ سوچ سکتے ہیں کہ ہم نے تین بار ٹور ڈی فرانس کے فاتح کی حیثیت سے انہیں ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر کی رقم ادا کی، اور یہ ان کے اس حلف نامے کے تحت دی گئی کہ وہ اداویات سے پاک صاف ہیں۔ اب انہوں نے ہمیں بتایا ہے، کم سے کم اوپرہ کے ذریعے، کہ جب انہوں نے ادویات سے پاک صاف رہنے کی بات کہی تھی تو جھوٹ بولا تھا۔ انہوں نے سبھی ریسوں میں ادویات کا استعمال کیا ہے۔"

کمپنی کے وکیل

لیکن اوپرہ ونفری کے شو میں ڈوپنگ کے اعتراف کے بعد کمپنی کے وکیل نے کہا کہ اب ان سے یہ رقم واپس لی جائےگی جو قانونی لڑائی اور سود سمیت اب وہ تقریباً ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر بنتی ہے۔

کمپنی کے وکیل جیف نے کہا ’آپ سوچ سکتے ہیں کہ ہم نے تین بار ٹور ڈی فرانس کے فاتح کی حیثیت سے انہیں ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر کی رقم ادا کی، اور یہ ان کے اس حلف نامے کے تحت دی گئی کہ وہ اداویات سے پاک صاف ہیں۔ اب انہوں نے ہمیں بتایا ہے، کم سے کم اوپرہ کے ذریعے، کہ جب انہوں نے ادویات سے پاک صاف رہنے کی بات کہی تھی تو جھوٹ بولا تھا۔ انہوں نے سبھی ریسوں میں ادویات کا استعمال کیا ہے۔‘

جیف نے کہا کہ ان سے بارہ ملین ڈالر کی رقم واپس کرنے کا مطالبہ کیا گيا ہے ’اور اگر پیسہ واپس نہ آیا تو ہمارے مؤکل ان پر مقدمہ دائرکریں گے۔ ان کے خیال سے لانس آرمسٹرونگ کو یہ فنڈ رکھنے کا قانونی یا اخلاقی جواز نہیں ہے۔‘

ماضی میں لانس آرمسٹرانگ نے ڈوپنگ کے الزامات کو ہمیشہ غلط قرار دیا لیکن انہوں نے خود پر امریکہ میں کارکردگی بڑھانے والی ادویات کی روک تھام کے ادارے یوساڈا کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات پر جرح بھی نہیں کی جبکہ ان کے وکیل نے اس رپورٹ کو یکطرفہ قرار دیا تھا۔

خیال رہے کہ یوساڈا نے آرمسٹرونگ اور ان کی ٹیم پر الزام عائد کیا تھا کہ انہوں نے ڈوپنگ کا ایسا ’جدید، پیشہ ورانہ اور کامیاب‘ طریقہ اپنایا، جو اب تک کھیل کی دنیا میں دیکھنے کو نہیں ملا ہے۔

اس کے بعد یوساڈا نے آرمسٹرونگ کا معاملہ انٹرنیشنل سائیکلنگ یونین (یو آئی سی) کو بھجوایا تھا۔

جس پر انٹرنیشنل سائیکلنگ یونین (یو آئی سی) نے امریکہ میں کارکردگی بڑھانے والی ادویات کی روک تھام کے ادارے یوساڈا کی رپورٹ کو تسلیم کرتے ہوئے کارروائی کی اور لانس آرمسٹرانگ سے ٹور ڈی فرانس ریس کے سات ٹائٹلز سمیت تمام اعزازات واپس لینے کا اعلان کیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔