بھارت میں خواتین کرکٹ ورلڈ کپ کا آغاز

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 31 جنوری 2013 ,‭ 05:54 GMT 10:54 PST

پاکستانی ٹیم سکیورٹی خدشات کی بنا پر اپنے تمام میچ ممبئی کی بجائے کٹک میں کھیلے گی

جمعرات کے روز بھارت میں خواتین کے کرکٹ ورلڈ کپ کا آغاز ہو رہا ہے۔ افتتاحی میچ میں گروپ اے میں بھارت کا مقابلہ ممبئی میں ویسٹ انڈیز سے ہو گا۔

جمعے کو دفاعی چیمپیئن انگلینڈ کا مقابلہ سری لنکا سے ہو گا۔

ٹورنامنٹ سے قبل وارم اپ میچ میں بھارت نے نیوزی لینڈ کی ٹیم کو غیر متوقع طور پر 45 رنز سے ہرا دیا تھا۔ تاہم دوسرے وارم اپ میچ میں اسے آسٹریلیا سے شکست ہو گئی تھی۔

آسٹریلیا نے ویسٹ انڈیز کو بھی وارم اپ میچ میں 135 رنز کی بھاری شکست سے دوچار کیا تھا۔

ٹورنامنٹ سے ایک ہفتہ قبل اس کے شیڈیول میں اس وقت تبدیلی کرنا پڑی تھی جب پاکستانی ٹیم کے میچ سکیورٹی خدشات کی وجہ سے ممبئی سے کٹک منتقل کر دیے گئے۔ اصل شیڈیول کے مطابق تمام میچ ممبئی کے تین میدانوں پر کھیلے جانے تھے۔

دائیں بازو کی ہندو انتہا پسند جماعت شیو سینا نے دھمکی دی تھی کہ وہ پاکستانی ٹیم کے میچوں میں خلل ڈالیں گی۔

اگرچہ پاکستانی ٹیم پہلے اور دوسرے راؤنڈ کے تمام میچ کٹک میں کھیلے گی لیکن اگر ٹیم نے 17 فروری کو کھیلے جانے والے فائنل کے لیے کوالیفائی کر لیا تو اسے ممبئی آنا پڑے گا۔

بھارتی ٹیم کی کپتان متھالی راج نے کہا کہ انھیں پاکستانی ٹیم کے خلاف مظاہروں پر مایوسی ہوئی ہے۔

"میرا ذاتی خیال ہے کہ سیاست کو کھیلوں سے دور رکھنا چاہیے۔ کھیل تفریح اور ہلے گلے کا موقع ہوتا ہے۔ اس لیے ہمیں ان میں سیاسی مسائل کو شامل نہیں کرنا چاہیے۔"

بھارتی ٹیم کی کپتان متھالی راج

انھوں نے خبررساں ادارے اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا، ’میرا ذاتی خیال ہے کہ سیاست کو کھیلوں سے دور رکھنا چاہیے۔‘

انھوں نے کہا، ’کھیل تفریح اور ہلے گلے کا موقع ہوتا ہے۔ اس لیے ہمیں ان میں سیاسی مسائل کو شامل نہیں کرنا چاہیے۔‘

پاکستان کی ٹیم نے منگل کے روز کٹک کے باربتی سٹیڈیم میں اپنے وارم اپ میچ میں علاقائی ٹیم اوڈیشا الیون کو 95 رنز سے شکست دی تھی۔

ٹورنامنٹ میں آٹھ ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں جنھیں چار چار کے دو گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ گروپ اے میں بھارت، ویسٹ انڈیز، انگلینڈ اور سری لنکا، جب کہ گروپ بی میں پاکستان، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، اور جنوبی افریقہ کی ٹیمیں شامل ہیں۔

ہر گروپ میں سے تین تین ٹیمیں سپر سکس مرحلے کے لیے کوالیفائی کریں گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔