آئی پی ایل نیلامی: پاکستانی کھلاڑی نظرانداز

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 1 فروری 2013 ,‭ 22:05 GMT 03:05 PST

رکی پونٹنگ کی بنیادی قیمت چار لاکھ ڈالر رکھی گئی ہے

بے شمار دولت سے بھرپور انڈین پریمیئر لیگ کے چھٹے ایڈیشن کے لیے اتوار کو چنئی میں 101 کھلاڑیوں کی نیلامی ہوگی۔

لیکن ایک بار پھر اس فہرست میں پاکستان کے کھلاڑیوں کے نام نہیں ہیں۔ سنہ 2008 میں ممبئی میں ہونے والے حملوں کے بعد سے ہی آئی پی ایل پاکستانی کھلاڑیوں کو نظر انداز کر رہی ہے۔

اس نیلامی میں آسٹریلیا کے سابق کپتان رکی پونٹنگ اور ان کے جانشین مائیکل کلارک کی بنیادی قیمت سب سے زیادہ چار لاکھ ڈالر رکھی گئی ہے۔

بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائر ہوئے پونٹنگ اور کلارک سمیت چار کھلاڑیوں کو نیلامی کے لیے مخصوص فہرست میں رکھا گیا ہے۔

اس کلب میں شامل دو دیگر کھلاڑی جنوبی افریقہ کے آل راؤنڈر يوہان بوٹا اور بھارتی ٹیم میں شامل نہیں کیے گئے فاسٹ بالر آر پی سنگھ ہیں۔

بوٹا کی بنیاد قیمت تین لاکھ ڈالر اور آر پی سنگھ کی قیمت ایک لاکھ ڈالر رکھی گئی ہے۔ آر پی کو پچھلی بار ممبئی انڈینز نے چھ لاکھ ڈالر میں خریدا تھا لیکن وہ گیارہ میچوں میں دس وکٹ ہی لے سکے تھے اور ٹیم نے انہیں ریلیز کر دیا تھا۔

بین الاقوامی ٹی ٹوئنٹی کو الوداع کہہ چکے کلارک آئی پی ایل میں کھیل چکے ہیں جبکہ 38 سالہ پونٹنگ پہلے ایڈیشن میں کولکتہ نائٹ رائڈرز کی طرف سے کھیلے تھے۔

لیکن دونوں ہی اپنی شہرت کے مطابق کھیل پیش نہیں کر سکے تھے۔

اتوار کو ہونے والی نیلامی میں بھارت کے سات، انگلینڈ کے دو اور آئر لینڈ کے سٹار آل راؤنڈر کیون او برائن شامل ہیں۔

ویسٹ انڈیز کے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ فاتح ٹیم کے کپتان ڈیرن سیمی پہلی بار نیلامی کی فہرست میں شامل ہیں اور ان کی بنیادی قیمت ایک لاکھ ڈالر رکھی گئی ہے۔

گزشتہ سیشن میں فروخت نہیں ہونے والے انگلینڈ کے میٹ پرائر اور روی بوپارا کی بنیادی قیمت ایک لاکھ ڈالر اور دو لاکھ ڈالر رکھی گئی ہے۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔