جنوبی افریقہ کی برتری چار سو رنز سے زائد

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 2 فروری 2013 ,‭ 10:44 GMT 15:44 PST

میچ کے دوسرے روز جنوبی افریقہ کا بالروں نے تباہ کن بالنگ کی، ڈیل سٹین نے چھ وکٹیں حاصل کیں

جوہانسبرگ میں کھیلے جا رہے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز جنوبی افریقہ نے اپنی دوسری اننگز میں تین وکٹوں کے نقصان پر 207 رنز بنا لیے ہیں۔ اس طرح جنوبی افریقہ کی مجموعی برتری 411 رنز زیادہ ہو چکی ہے۔

اس سے قبل جنوبی افریقہ کے فاسٹ بولروں نے تباہ کن بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان کی پوری ٹیم کو 49 کے سکور پر آؤٹ کر دیا۔ یہ پاکستان کا کسی بھی ٹیسٹ اننگز میں سب سے کم سکور ہے۔

کلِک میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

جنوبی افریقہ نے پاکستان کو 49 رنز پر ڈھیر کرنے کے بعد پاکستان کو فالو کرنے کی بجائے خود بیٹنگ کرنے کو ترجیح دی۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے ہاشم آملا عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے کریز پر موجود ہیں اور ان کے ساتھ اے بی ڈیولیئرز کھیل رہے ہیں جنہوں نے اس سے پہلے وکٹوں کے پچھے چھ کیچ بھی پکڑے۔ جنوبی افریقہ کے آؤٹ ہونے والے کھلاڑیوں میں کپتان گریم سمتھ، ایلویرو پیٹرسن اور یاک کیلس شامل ہیں۔

پاکستان کی پوری ٹیم میں صرف دو کھلاڑی ہی دس سے زیادہ رنز بنا سکے۔ اظہر علی 13 جبکہ مصباح الحق 12 رنز بنا کر سرِ فہرست رہے۔

میچ کے پہلے دن جنوبی افریقہ کی ٹیم 253 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی جس کے جواب میں پاکستان نے بغیر کسی نقصان کے چھ رنز بنائے تھے۔

دوسرے دن کے کھیل کے پہلے ہی سیشن میں ڈیل سٹین تین وکٹیں حاصل کر کے جنوبی افریقہ کو میچ میں واپس لے آئے۔

دوسرے روز کو اگر بالر ڈیل سٹین کا دن کہا جائے تو مبالغہ نہ ہو گا جنہوں نے عمدہ بالنگ کا مظاہرہ کیا

سنیچر کو جب میچ شروع ہوا تو دن کے دوسرے ہی اوور میں ڈیل سٹین نے محمد حفیظ کو وکٹوں کے پیچھے کیچ کروا دیا۔ وہ چھ رنز بنا سکے۔

سٹین نے دوسری کامیابی ان فارم بلے باز ناصر جمشید کو ایل بی ڈبلیو کر کے حاصل کی، جنہوں نے صرف دو رنز بنائے۔

یونس خان آؤٹ ہونے والے تیسرے بلے باز تھے جو بغیر کوئی رن بنائے سلپ میں کپتان گریم سمتھ کے ہاتھوں کیچ ہو کر سٹین کا تیسرا شکار بنے۔

پاکستان کی چوتھی اور پانچویں وکٹ یاک کیلس نے اظہر علی اور کپتان مصباح الحق کو آؤٹ کر کے حاصل کی۔

39 کے مجموعی سکور پر پاکستان کی چھٹی اور ساتویں وکٹ گری جب اسد شفیق اور عمر گل کو فیلینڈر نے یکے بعد دیگرے پویلین بھیج دیا۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے سٹین نے چھ، جب کہ فیلنڈر اور کیلس نے دو دو وکٹیں لیں۔

اس سے قبل کسی ٹیسٹ اننگز میں پاکستان کا سب سے کم سکور 53 رنز ہے جو اس نے آسٹریلیا کے خلاف بنایا تھا۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم اپنی گزشتہ گیارہ ٹیسٹ سیریز میں ناقابلِ شکست رہی ہے جبکہ پاکستان کو گزشتہ آٹھ سیریزوں میں صرف ایک میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

پاکستان نے سنہ 2008 میں جنوبی افریقہ کا دورہ کیا تھا جس میں پاکستان کو دو کے مقابلے میں ایک میچ سے شکست ہوئی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔