ورلڈ کپ: پاکستان اور بھارت کو شکست

آخری وقت اشاعت:  اتوار 3 فروری 2013 ,‭ 08:27 GMT 13:27 PST
پاکستانی کرکٹ ٹیم

پاکستانی خواتین کرکٹ ٹیم بھارت کے شمالی شہر کٹک کے میدان میں پریکٹس کے لیے جار ہی ہیں

بھارت میں خواتین کے کرکٹ ورلڈ کپ میں نیوزی لینڈ نے پاکستان جبکہ انگلینڈ نے بھارت کو شکست دے دی ہے۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کا میچ بھارت کی شمالی ریاست اڑیسہ کے شہر کٹک میں کھیلا گیا جو نیوزی لینڈ کی ٹیم نے سات وکٹوں سے جیتا۔

پاکستان کی پوری ٹیم پہلے کھیلتے ہوئے اکتالیس اعشاریہ دو اوورز میں ایک سو چار رنز بناکر آؤٹ ہو گئي۔

پاکستان کی جانب سے بسمہ معروف نے بیس، اسماویہ اقبال نے اکیس اور قانطہ جلیل نے چودہ رنز بنائے۔ ان کے علاوہ کسی بھی بلے باز کا سکور دوہرے ہندسوں تک نہ پہنچ سکا۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ریشل کینڈی نے انیس رنز کے عوض پانچ وکٹیں حاصل کیں جبکہ نکولا برائنی نے دو اور ڈولن اور بروڈ مور نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

جواب میں نیوزی لینڈ نے مقررہ ہدف باآسانی تین وکٹوں کے نقصان پر حاصل کر لیا۔ نیوزی لینڈ کی طرف سے سوزی بیٹس نے پینسٹھ رنز کی اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کی فتح میں اہم کردار ادا کیا۔

بھارت بمقابلہ انگلینڈ

دوسرے میچ میں انگلش خواتین نے بھارتی ٹیم کو فتح کے لیے دو سو تہتر رنز کا ہدف دیا تھا۔

ممبئی میں کھیلے جانے والے میچ میں انگلینڈ کی اننگز کی خاص بات ان کی کپتان شارلٹ ایڈورڈز کی سنچری تھی۔

وہ ایک سو نو رنز بناکر آؤٹ ہوئیں جبکہ انگلش ٹیم نے مقررہ پچاس اوورز میں آٹھ وکٹ کے نقصان پر دو سو بہتّر رنز بنائے۔

اپنی اس اننگزکے دوران شارلٹ ون ڈے میں سب سے زیادہ رنز بنانے والی خاتون کھلاڑی بھی بن گئیں۔ اس سے قبل یہ ریکارڈ آسٹریلیا کی بلنڈا کلارک کے نام تھا جنھوں نے چار ہزار چار سو چوالیس رنز بنائے ہیں۔

بھارت کی جانب سے جھولن گوسوامی اور این نرنجنا نے دو دو وکٹ لیے جبکہ ایک وکٹ گوہر سلطانہ کے حصے میں آئی۔

اس کے جواب میں بھارتی ٹیم مقررہ اوورز میں دو سو چالیس رنز ہی بنا سکی۔ بھارت کی جانب سے ہرمن پریت کور اور کارو جین کے علاوہ کوئی بھی بلے باز جم کر نہ کھیل سکی۔

ہرمن پریت نے سنچری بناتے ہوئے ایک سو سات رنز کی عمدہ اننگز کھیلی جبکہ کارو جین نے بھی نصف سنچری بنائی۔

انگلینڈ کی جانب سے کیتھرین برنٹ نے انتیس رنز کے عوض چار وکٹیں حاصل کیں۔

آسٹریلیا بمقابلہ جنوبی افریقہ

بھارت کے شمالی شہر کٹک میں کھیلے جانے والے میچ میں آسٹریلیا نے جنوبی افریقہ کو تین وکٹ سے شکست دے دیا ہے۔ پہلے کھیلتے ہوئے جنوبی افریقہ کی ٹیم نے مقررہ پچاس اوورز میں ایک سو اٹھاسی رنز بنائے۔

جنوبی افریقی کھلاڑی ٹریشا چیٹی اور ایم کاپ نے انسٹھ اور اکسٹھ رنوں کی مستحکم اننگز کھیلی۔

آسٹریلیا کے سامنے جیت کے لیے ایک سو نواسی رنز کا حدف تھا جسے اس نے سات وکٹ کے نقصان پر حاصل کر لیا۔ آسٹریلیا کی جانب سے بائیں ہاتھ کی بلے باز ریشل ہینز نے تراسی رنز کی شاندا اننگز کھیلی۔

جنوبی افریقہ کی شبنم اسماعیل نے بہترین گیندبازی کا مظاہرہ کرتے ہوئی اکتالیس رنز کے عوض چار وکٹ لیے لیکن وہ اپنی ٹیم کو جیت نہ دلا سکیں۔

سری لنکا بمقابلہ ویسٹ انڈیز

ممبی میں ہی ایک دوسرے میدان میں ویسٹ انڈیز نے سری لنکا کو دو سو نو رنز کے واضح فرق سے شکست دے دی ہے۔

پہلے کھیلتے ہوئے ویسٹ انڈیز نےتین سو اڑسٹھ رنز کا بڑا سکور کھڑا کیا جس کے جواب میں سری لنکا کی پوری ٹیم ایک سو انسٹھ رنز پر آؤٹ ہو گئي۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے سٹیفینی ٹیلر نے ایک سو اکہتر رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔ ان کے علاوہ جے ایس ڈاٹن نے پچاس اور کپتان اور وکٹ کیپر ایم آر اگیلیرا نے بغیر آوٹ ہوئے سینتالیس رنز بنائے۔

سری لنکا کی جانب سے سی آر سریوردنے، ایس ڈی سریوردنے اور ایس روی کمار نے دو دو وکٹ لیے۔

سری لنکا کی جانب سے کوئی بھی کھلاڑی اٹھائیس رنز سے زیادہ نہ بنا سکا اور پوری ٹیم چالیس اوورز میں ہی آؤٹ ہو گئی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔