پاکستانی سکواش بھی نیوٹرل مقام پر

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 9 فروری 2013 ,‭ 20:28 GMT 01:28 PST

پاکستان میں بین الاقوامی کھیل نہ ہونے کا اگرچہ زیادہ اثر کرکٹ پر پڑا ہے لیکن دوسرے کھیل بھی اس سے متاثر ہوئے بغیر نہیں رہ سکے ہیں جن میں سکواش بھی شامل ہے۔

پاکستان میں ہرسال متعدد بین الاقوامی سکواش ٹورنامنٹس ہوتے تھے لیکن سکیورٹی کی صورت حال نے سکواش کورٹس کو بھی اسی طرح ویران کردیا ہے جیسے کرکٹ اور ہاکی کے میدان۔

پاکستان سکواش فیڈریشن نے اس صورت حال میں کرکٹ کی طرز پر اپنی سکواش کو نیوٹرل مقام پر لے جانے کا فیصلہ کیا ہے اور وہ بھاری اسپانسرشپ کے ساتھ ایک ٹورنامنٹ متحدہ عرب امارات میں منعقد کرنے والی ہے۔

پاکستان سکواش فیڈریشن کے سینیئر نائب صدر ایئر وائس مارشل سید رضی نواب نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے غیرملکی سفارت خانوں کی سفری ہدایات کھلاڑیوں کو پاکستان آنے سے روکے ہوئے ہیں ایسے میں پاکستان میں بین الاقوامی ٹورنامنٹس منعقد نہیں ہو رہے ہیں۔

پاکستان سکواش فیڈریشن نے متحدہ عرب امارات کی سکواش فیڈریشن کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت ایک انوی ٹیشن ٹورنامنٹ متحدہ عرب امارات میں اس ماہ کے آخر یا آئندہ ماہ منعقد ہوگا۔

ایئر وائس مارشل رضی نواب کا کہنا ہے کہ پاکستان سکواش فیڈریشن کو اس ٹورنامنٹ کے لیے سپانسرمل چکا ہے اور وہ اس ایونٹ میں شرکت کے لیے مصری سکواش حکام سے بات چیت کر رہی ہے۔

پاکستان سکواش فیڈریشن کے سینئیر نائب صدر کا کہنا ہے کہ چونکہ پاکستانی کھلاڑیوں کو ان دنوں کھیلنے کے مواقع کم مل رہے ہیں لہذا انہیں امریکہ میں انٹرنیشنل ٹورنامنٹس کھیلنے کے زیادہ سے زیادہ مواقع فراہم کرنے کے لیے ڈوور کے ایک کلب سے معاہدہ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں چار کھلاڑیوں فرحان زمان، عامراطلس، دانش اطلس اور ناصر اقبال کا انتخاب کیا گیا۔

سینئیر نائب صدر کے مطابق بدقسمتی سے ناصر اقبال کو امریکہ کا ویزا نہیں مل سکا جبکہ بقیہ تین کھلاڑی امریکہ گئے جن میں سے فرحان زمان ابھی بھی امریکہ میں ٹریننگ اور انٹرنیشنل ٹورنامنٹس کھیل رہے ہیں۔

ایئر وائس مارشل رضی نواب نے بتایا کہ کھیلوں کے بلند معیار میں تعلیم یافتہ سپورٹس مین کی بڑی اہمیت ہے اور اسی بات کو مدنظر رکھتے ہوئے پاکستان سکواش فیڈریشن نے چار کھلاڑیوں کا انتخاب کرکے انہیں ایک اچھے بورڈنگ سکول میں چھٹی اور آٹھویں جماعتوں میں داخل کرایا تاکہ وہ اچھی تعلیم بھی حاصل کریں اور انہیں ایک سکواش کوچ بھی فراہم کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔