حیدرآباد:آسٹریلوی اننگز 237 رنز پر ڈکلیئر

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 2 مارچ 2013 ,‭ 08:44 GMT 13:44 PST
کلارک

کلارک نے ایک بار پھر ذمے دارانہ اننگز کھیلی

بھارت کے شہر حیدرآباد میں بھارت کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کے پہلے دن آسٹریلیا نے اپنی پہلی اننگز نو وکٹوں کے نقصان پر 237 رنز بنا کر ڈکلیئر کر دی ہے۔

بظاہر آسٹریلوی کپتان کلارک کا مقصد اپنے بالروں کو موقع دینا تھا کہ وہ میچ کے اختتام سے قبل چند اوورز میں بھارت کی ایک آدھ وکٹ حاصل کر سکیں تاہم ان کی یہ خواہش پوری نہیں ہو سکی اور بھارت نے بقیہ تین اووروں میں بغیر کسی نقصان کے پانچ رنز بنا لیے۔

کلِک میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

آسٹریلیا کی اننگز کا آغاز تباہ کن انداز میں ہوا تھا، اور صرف 15 رنز پر اس کے دونوں اوپنر پویلین لوٹ چکے تھے۔ 63 رنز پر اس کی چار وکٹیں گر گئی تھیں، لیکن بعد میں کلارک اور ویڈ کی شراکت نے اننگز کو سہارا دیا۔

اس کے بعد مائیکل کلارک اور وکٹ کیپر میتھیو ویڈ کے درمیان پانچویں وکٹ کے لیے 145 رنز کی عمدہ شراکت نے ٹیم کو اچھی پوزیشن دلوا دی تھی۔ تاہم 208 کے مجموعی سکور پر ویڈ کے آؤٹ ہونے کے بعد آسٹریلیا کی بقیہ چار وکٹیں سکور میں صرف 31 رنز کا اضافہ کر سکیں۔

مائیکل کلارک نے ایک بار پھر ذمے دارانہ باری کھیلتے ہوئے 91 رنز بنائے۔ ویڈ نے 62 رنز بنائے۔ کلارک نے سیریز کے پہلے میچ کی پہلی اننگز میں 130 رنز بنائے تھے تاہم اپنی ٹیم کو شکست سے بچانے میں ناکام رہے تھے۔

بھارت کی طرف سے بھونیشور کمار اور جدیجا نے تین تین وکٹیں لیں، جب کہ ہربھجن سنگھ نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

بھارت کو چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں ایک صفر سے برتری حاصل ہے۔

اس میچ میں آسٹریلیا کی جانب سے گلین میکسول اپنا پہلا ٹیسٹ کھیل رہے ہیں اور انہیں میتھیو ہیڈن نے آسٹریلیائی سبز بیگی کیپ پہنائی۔ بھارت اور آسٹریلیا کے درمیان ٹیسٹ سیریز کو گاوسکر _ بورڈر ٹرافی کہا جاتا ہے۔

کرکٹ پچ کے بارے میں روی شاشتری کا کہنا ہے کہ یہ پہلے بلے بازی کرنے والا ٹریک ہے جبکہ آسٹریلیا کے سابق کپتان ایلن بورڈر کا خیال ہے کہ اس پچ میں شروعات میں تیز گیند بازوں کے لیے بھی کچھ ہے۔

ٹاس جیت کر مائیکل کلارک نے کہا کہ چنئی کے مقابلے میں یہاں کی پچ زیادہ سخت ہے تاہم سپنرز اہم کردار ادا کریں گے۔ بھارت کے کپتان مہندر سنگھ دھونی نے کہا کہ یہ پچ چنئی سے بالکل مختلف ہے امید کہ ہم اچھی بولنگ کریں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔