جنوبی افریقہ پہلا ایک روزہ میچ جیت گیا

آخری وقت اشاعت:  اتوار 10 مارچ 2013 ,‭ 11:50 GMT 16:50 PST

پانچ ایک روزہ کرکٹ میچوں کی سیریز کے پہلے میچ میں جنوبی افریقہ نے پاکستان کی پوری ٹیم کو 36.2 اوورز میں 190 رنز پر آؤٹ کر کے پہلا ایک روزہ میچ جیت لیا۔

جنوبی افریقہ نے پہلے کھیلتے ہوئے 315 رنز بنائے تھے جس کے جواب میں پاکستان کی ٹیم جم کر نہ کھیل سکی اور یکے بعد دیگرے اس کے کھلاڑی آؤٹ ہوتے گئے۔

پاکستان کی طرف سے سب سے زیادہ رنز مصباح الحق نے بنائے جو 38 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ ان کے علاوہ شاہد آفریدی 34 رنز بنا کر نمایاں رہے۔

بلوم فاؤنٹین میں کھیلے جانے والے میچ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر جنوبی افریقہ کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تو اس نے مقررہ 50 اوورز میں چار وکٹوں کے نقصان پر 315 رنز بنائے۔

جنوبی افریقہ کے لیے ہاشم آملہ اور گریم سمتھ نے اننگز کا آغاز کیا تو ان دونوں بلے بازوں کے درمیان 72 رنز کی شراکت ہوئی جس کا خاتمہ سعید اجمل نے سمتھ کو آؤٹ کر کے کیا۔

سمتھ کے آؤٹ ہونے کے کچھ دیر بعد ہی ہاشم آملہ محمد حفیظ کی گیند پر کیچ ہو گئے۔

اس موقع پر کولن انگرم نے ابراہم ڈی ویلیئرز کے ساتھ مل کر عمدہ بلے بازی کی اور وکٹ کے چاروں جانب دلکش سٹروک کھیلے۔

انگرم نے ناقابلِ شکست سنچری بنائی جبکہ ڈی ویلیئرز 65 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

اننگز کے آخری اوور میں فرحان بہاردین کی چودہ گیندوں پر چونتیس رنز کی جارحانہ اننگز نے جنوبی افریقہ کو ایک بڑے مجموعے تک پہنچنے میں مدد دی۔

پاکستان کی جانب سے سعید اجمل نے دو جبکہ محمد حفیظ اور جنید خان نے ایک ایک وکٹ لی۔ عمر گل سب سے مہنگے بالر رہے جنہوں نے دس اوورز میں اڑسٹھ رنز دیے اور کوئی وکٹ حاصل نہ کر سکے۔

ایک روزہ سیریز سے قبل دونوں ٹیمیں ٹیسٹ اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیل چکی ہیں اور جہاں ٹیسٹ مقابلوں میں جنوبی افریقہ نے تین صفر سے کلین سویپ کیا تھا وہیں پاکستان نے ٹی ٹوئنٹی سیریز ایک صفر سے جیت لی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔