گال ٹیسٹ: مشفق الرحیم کا تاریخی کارنامہ

آخری وقت اشاعت:  پير 11 مارچ 2013 ,‭ 08:28 GMT 13:28 PST
مشفق الرحیم

بنگلہ دیش کی جانب سے مشفق الرحیم نے 22 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 200 رنز بنائے

گال ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن کھانے کے وقفے کے بعد مشفق الرحیم بنگلہ دیش کی جانب سے پہلی ڈبل سنچری بنانے والے کھلاڑی بن گئے ہیں۔

اس سے پہلے میچ کے تیسرے دن بنگلہ دیش کے شائقین پرامید تھے کہ بلے باز محمد اشرفل بنگلہ دیش کی جانب سے پہلی ڈبل سنچری بنائیں گے مگر وہ 190 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے تھے۔

گال ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن مشفق الرحیم جو کہ بنگلہ دیش کے کپتان بھی ہیں نے یہ کارنامہ انجام دیا جسے بنگلہ دیش کے شائقین کو مدت سے انتظار تھا۔

کلِک میچ کا تفصلی سکور کارڈ

مشفق الرحیم دوسو رنز بنانے کے فوراً بعد آؤٹ ہو گئے۔

اس وقت کریز پر ناصر حسین اور عبدل حسن موجود ہیں اور دونوں نے بالتریت 80 اور صفر رنز بنائے ہیں۔

بنگلہ دیش کو سری لنکا کے خلاف 30 رنز کی برتری حاصل ہے اور پہلی اننگز میں اس کی تین وکٹیں باقی ہیں۔

تیسرے دن کی خاص بات محمد اشرفل اور مشفق الرحیم کی شاندار بلے بازی تھی۔ دونوں بلے بازوں نے پانچویں وکٹ کے لیے 267 رنز کی شراکت قائم کی جوکہ بنگلہ دیش کی جانب سے کسی بھی وکٹ کے لیے ایک ریکارڈ ہے۔

بنگلہ دیش کی جانب سے مشفق الرحیم نے 22 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 200 رنز بنائے۔

سری لنکا کی جانب سے ہیراتھ نے دو، کالو سیکرا، مینڈس اور ایرنگا نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سے پہلے سری لنکا نے بنگلہ دیش کے خلاف چار وکٹوں کے نقصان پر 570 رنز پر اپنی اننگز ڈکلئیر کر دی تھی۔

سری لنکا کے تین کھلاڑیوں نے سنچریاں بنائیں۔

سری لنکا کی جانب سے لہیرو تھیرامانے سب سے زیادہ 155 رنز بنائے اور آوٹ نہیں ہوئے۔

بنگلہ دیش کی جانب سے سہاگ غازی نے تین جبکہ ابوالحسن نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سیریز میں دو ٹیسٹ، تین ایک روزہ اور ایک ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے جائیں گے۔

سیریز کا دوسرا ٹیسٹ میچ 16 مارچ سے کولمبو میں ہوگا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔