پاکستان نے سیریز دو دو سے برابر کر دی

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 21 مارچ 2013 ,‭ 16:36 GMT 21:36 PST

پاکستانی اننگز کی خاص بات عمران فرحت کے ترانوے رنز اور مصباح الحق کے اسی رنز تھے۔

ڈربن میں کھیلے گئے چوتھے ایک روزہ میچ میں پاکستان نے جنوبی افریقہ کو تین وکٹوں سے شکست دے کر سیریز دو دو سے برابر کر دی ہے۔

جنوبی افریقہ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور 234 پر پوری ٹیم آؤٹ ہو گئی۔

اس کے جواب میں پاکستانی ٹیم کا آغاز بہت غیر مستحکم رہا جس کے ابتدائی بیٹسمین یکے بعد دیگرے آؤٹ ہوئے۔

پاکستانی ٹیم کے اوپنر عمران فرحت نے آٹھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ترانوے رنز بنائے اور سٹین کی بال پر بہاردین کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

عمران فرحت کے ساتھ آنے والے محمد حفیظ صفر پر پویلین واپس گئے جن کی جگہ لی کامران اکمل نے جنہوں نے دو چوکوں کی مدد سے گیارہ رنز بنائے اور ٹسوٹسوبے کی بال پر ملر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

کامران کے جانے کے بعد محمد یونس کریز پر آئے مگر کچھ زیادہ دیر ٹِک نہیں پائے اور چھ رنز بنا کر کلائن ویلٹ کی بال پر آؤٹ ہوئے۔

محمد یونس کی جگہ لی مصباح الحق نے جنہوں نے کریز پر جم کر بیٹنگ کی اور پاکستانی کی اننگز کو استحکام دیا۔

مصباح الحق نے اسی رنز بنائے اور پیٹرسن کی بال پر بہاردین کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

شاہد آفریدی کا پچ پر قیام بہت مختصر رہا اور انہوں نے صرف ایک چوکا لگا کر پولین واپس رخ کیا۔ شاہد آفریدی دوسرے چوکے کی کوشش میں پیٹرسین کی بال پر ڈی ولئیر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

وہاب ریاض ملر کی بال پر رن آؤٹ ہو کر پویلین بغیر کسی رن بنائے واپس چلے گئے۔

شعیب ملک انیس رنز اور سعید اجمل پانچ رنز کے ساتھ ناٹ آؤٹ رہے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے پیٹرسن نے دو جبکہ سٹین، کلائن ویلٹ اور ٹسوسٹوبے نے ایک وکٹ حاصل کی۔

جنوبی افریقہ نے سترہ مارچ کو جوہانسبرگ میں کھیلے جانے والے تیسرے ایک روزہ کرکٹ میچ میں پاکستان کو 34 رنز سے شکست دی تھی۔

دس مارچ کو کھیلے جانے والے پہلے ایک روزہ میچ میں جنوبی افریقہ نے پاکستان کو 125 رنز سے شکست دی تھی جبکہ دوسرا میچ پاکستان نے چھ وکٹوں سے جیتا تھا۔

جوہانسبرگ میں کھیلے گئے تیسرے ایک روزہ میچ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا تھا جو ایک مرتبہ پھر صحیح ثابت نہیں ہو سکا تھا اور جنوبی افریقہ نے ہاشم آملہ اور ابراہم ڈی ویلیئرز کی سنچریوں کی بدولت پاکستان کو فتح کے لیے 344 رنز کا ہدف دیا تھا۔

اس کے جواب میں پاکستانی ٹیم انچاسویں اوور میں 309 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی۔

پاکستانی اننگز کی خاص بات ایک عرصے سے آؤٹ آف فارم شاہد آفریدی کی دھواں دھار بلے بازی تھی۔ انہوں نے7 چھکوں اور 5 چوکوں کی مدد سے 48 گیندوں پر 88 رنز کی اہم اننگز کھیلی۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے جنوبی افریقہ تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز تین صفر سے جیت گیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔