بھارت کی آسٹریلیا کے خلاف تاریخی فتح

آخری وقت اشاعت:  اتوار 24 مارچ 2013 ,‭ 08:42 GMT 13:42 PST
ناتھن لائن

بھارتی ٹیم نے پہلی بار آ‎سٹریلیائی ٹیم کو چار صفر سے شکست دی ہے

بھارتی دارالحکومت دلّی کے فیروز شاہ کوٹلہ کے میدان پر چوتھے ٹیسٹ میچ میں بھارت نے آ‎سٹریلیا کو چھ وکٹ سے شکست دیکر چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز صفر کے مقابلے چار سے جیت لی ہے۔

کرکٹ کی تاریخ میں بھارت نے پہلی بار کسی بھی ٹیسٹ سیریز میں آ‎سٹریلیا کی ٹیم کو چار صفر سے پہلی بار مات دی ہے۔

اس پوری سیریز میں سپن بولر ایشون کمار نے انتیس وکٹیں حاصل کیں جس کی وجہ سے انہیں مین آف دی سیریز کا اعزاز دیاگيا جبکہ اس ٹیسٹ میں پانچ وکٹیں لینے کے سبب روندر جڈیجا کو مین آف دی میچ کا خطاب ملا۔

تیسرے دن کھانے کے وقفے کے بعد آسٹریلیا کی ٹیم دوسری اننگز میں 164 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی تھی اور بھارت کو ایک سو پچپن رن کا ہدف ملا تھا۔

بھارتی ٹیم نے اس ہدف کو اکتیس اعشاریہ دو اوور میں چار وکٹ کے نقصان پر حاصل کر لیا اور اس طرح میچ بھی تیسرے روز ہی ختم ہوگیا۔

بھارت کی طرف سے چیتیشور پچارا نے شاندار بیٹنگ کی جنہوں نے مشکل وکٹ پر اکیاسی رن بنائے اور آخر تک آؤٹ نہیں ہوئے جبکہ ویرات کوہلی اکتالیس رن بناکر آؤٹ ہوگئے۔

مرلی وجے نےگيارہ رن جبکہ سچن تیندولکر اور اجنکیہ رہانے ایک ایک رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔ مہندر سنگھ دھونی نے بارہ رن بنائے اور وہ بھی ناٹ آؤٹ رہے۔

اس سے قبل بھارت نے پہلی اننگز میں آسٹریلیا کے 262 کے جواب میں 272 رنز بنائے تھے اور دس رنز کی معمولی برتری حاصل کی تھی۔

آسٹریلیا کی دوسری اننگز میں ایک بار پھر پیٹر سیڈل نے نصف سنچری سکور کی اور کوئی دوسرا کھلاڑی نصف سنچری بھی نہیں بن سکا۔

اس پوری سیریز میں آسٹریلیا کی ٹیم بھارتی ٹیم کے سامنے دباؤ میں دکھی اور مائیکل کلارک کی قیادت میں آئی ٹیم کئی مسائل سے جوجھتی رہی۔

چونکہ کلارک زخمی ہوگئے تھے اس لیے دلی کے آخری ٹیسٹ میچ کی کپتانی شین واٹسن نے کی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔