’سری لنکن کھلاڑی چنئی میں نہیں کھیلیں گے‘

ملنگا
Image caption آئی پی ایل 2013 میں دس سے زیادہ سری لنکن کھلاڑی مختلف ٹیموں کا حصہ ہیں

سری لنکا میں خانہ جنگی کے دوران انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزی کے مسئلے کا سایہ بھارت میں ہونے والی انڈین پریمیئر لیگ پر بھی پڑتا نظر آرہا ہے اور آئی پی ایل کی گورننگ کونسل نے طے کیا ہے کہ چنئی میں ہونے والے میچوں میں سری لنکن کھلاڑی نہیں کھیلیں گے۔

یہ فیصلہ ریاست تمل ناڈو کی وزیراعلیٰ جے للیتا کے وزیراعظم منموہن سنگھ کو لکھے گئے خط کے بعد کیا گیا ہے جس میں انہوں نے وزیر اعظم سے درخواست کی ہے کہ وہ بی سی سی آئی سے کہیں کہ ان کی ریاست میں سری لنکا کے کھلاڑی اور افسر آئی پی ایل میچ کھیلنے نہ آئیں۔

آئی پی ایل کے چیئرمین راجیو شکلا نے منگل کو صحافیوں کو بتایا،’جے للیتا کے خط کے بعد ہم نے طے کیا کہ چنئی میں میچ منسوخ نہیں ہوں گے لیکن وہاں سری لنکن کھلاڑی نہیں کھیلیں گے۔‘

اس بار آئی پی ایل تین اپریل سے شروع ہو رہا ہے اور رواں برس ٹورنامنٹ کے دوران چنئی میں کئی میچ ہونے ہیں۔

اس مرتبہ دس سے زیادہ سری لنکن کھلاڑی مختلف ٹیموں کا حصہ ہیں حتیٰ کہ چنئی سپر کنگز میں بھی دو سری لنکن دو کھلاڑی ہیں۔

خیال رہے کہ سری لنکا میں خانہ جنگی کے دوران تمل افراد کے خلاف مبینہ زیادتیوں کا معاملہ گزشتہ کچھ وقت سے سرخیوں میں رہا ہے۔

بھارت کا موقف رہا ہے کہ سری لنکا انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے معاملات کی ’آزاد اور قابل اعتماد‘ تحقیقات کرائے۔

کچھ دن پہلے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی سے متعلق امریکی تجویز کو منظور کیا گیا تھا اور بھارت نے بھی اس تجویز کی حمایت میں ووٹ ڈالا تھا۔

اس پر تمل ناڈو کی اہم اپوزیشن پارٹی ڈی ایم نے مرکزی حکومت کی حمایت سے ہاتھ کھینچ لیا تھا اور اس کے پانچ وزراء مستعفی ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں