ویٹوری کی واپسی کے امکانات روشن

Image caption وٹوری اپنے ٹخنے کی ہڈی سے جڑے پٹھے کی چوٹ کی وجہ سے گزشتہ ایک سال کے قریب سے مشکلات کا شکار تھے

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور آف سپنر ڈینیئل ویٹوری کی سکواڈ میں قبل از وقت شمولیت سے انہیں انگلینڈ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ میں کھلائے جانے کے امکانات روشن ہوگئے ہیں۔

بائیں ہاتھ سے گیند کروانے والے ویٹوری انگلینڈ کے خلاف ایک روزہ سیریز اور چیمپیئنز ٹرافی ٹورنامنٹ کے لیے کیوی ٹیم کا تو حصہ تھے تاہم اب انہیں بروس مارٹن کے زخمی ہونے کے بعد ٹیسٹ سکواڈ میں بھی شامل کر لیا گیا ہے۔

ویٹوری نے جولائی 2012 کے بعد سے نیوزی لینڈ کے لیے کوئی ٹیسٹ میچ نہیں کھیلا۔وہ ٹخنے کی ہڈی سے جڑے پٹھے کی چوٹ کی وجہ سے گزشتہ ایک سال سے مشکلات کا شکار رہے ہیں۔

انگلینڈ کے خلاف دوسرا ٹیسٹ میچ جمعہ سے ہیڈنگلے میں شروع ہو رہا ہے اور پہلے ٹیسٹ میں شکست کے بعد سیریز برابر کرنے کے لیے نیوزی لینڈ کو یہ ٹیسٹ ہر صورت میں جیتنا ہوگا۔

نیوزی لینڈ کے کوچ مائک ہیسن نے کہا کہ ’ویٹوری کی چوبیس گھنٹے پہلے آمد سے ہمیں یہ موقع ملا ہے کہ ہم انہیں دیکھ لیں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’اگر وہ تیار نہ ہوئے تو ہم انہیں زیادہ مشکل میں نہیں ڈالیں گے تاہم اگر ان کی فٹنس کھیلنے کی اجازت دیتی ہے تو ہمیں بہت اچھا لگے گا۔‘

360 ٹیسٹ وکٹیں حاصل کرنے والے ڈینیئل ویٹوری ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے نیوزی لینڈ کے بولروں میں دوسرے نمبر پر ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ وہ تاریخ کے سب سے کامیاب لیفٹ آرم سپنر بھی ہیں۔

اگر ویٹوری ہیڈنگلے ٹیسٹ کھیلتے ہیں تو یہ ان کا ایک سو بارہواں ٹیسٹ ہوگا اور وہ سابق کیوی کپتان سٹیفن فلیمنگ کی جگہ نیوزی لینڈ کے سب سے زیادہ ٹیسٹ میچ کھیلنے والے کرکٹر بن جائیں گے۔

اسی بارے میں