آئی پی ایل فکسنگ، ملزمان کی حراست میں توسیع

Image caption گروناتھ مییپّن بھارتی کرکٹ بورڈ کے داماد ہیں جن پر سٹّے بازي کا الزام ہے

ممبئی کی ایک عدالت نے آئی پی ایل میں مبینہ سپاٹ فکسنگ کے معاملے میں گرفتار کیےگئے بالی وڈ کے اداکار وندو دارا سنگھ اور چنئی سپر کنگز ٹیم سے منسلک گروناتھ ميپّن کی پولیس حراست کی مدت تین جون تک کے لیے بڑھا دی ہے۔

ان دونوں ملزمان کی پولیس ریمانڈ آج ختم ہورہا تھا جس کے لیے انہیں عدالت میں پیش کیا گيا۔

ممبئی کی پولیس کا کہنا ہے کہ اسے ان دونوں سے اور پوچھ گچھ کرنی ہے۔ گروناتھ مییپّن بھارتی کرکٹ بورڈ بی سی سی آئی کے سربراہ این شری نواسن کے داماد ہیں۔

بھارت میں میڈیا کی طرف سے اس حوالے پر شدید دباؤ ہے کہ چونکہ بھارتی کرکٹ بورڈ کے سربراہ کے داماد کو پولیس نے گرفتار کر لیا ہے اس لیے انہیں خود بھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دینا چاہیے۔

پہلے اس طرح کی خبریں آئي تھیں کہ میپّن چنئی ٹیم کے مالک ہیں لیکن بعد میں ٹیم نے اس کی تردید کی۔

چنائی سپر کنگز کی مالک کمپنی نے ایک بیان جاری کرکے واضح کیا تھا کہ میپّن نہ ٹیم کے مالک ہیں اور نہ ہی ٹیم کے سی ای او ہیں۔ بیان کے مطابق میپّن صرف ٹیم کے اعزازی رکن تھے۔

ممبئی کی پولیس آئی پی ایل سپاٹ فکسنگ کے معاملے میں وندو دارا سنگھ اور مییپّن کے چنئي کی ٹیم سے رابطوں کی جانچ کرنا چاہتی ہے۔ اسی سلسلے میں چنئي کے ایک ہوٹل کے مالک وکرم اگروال سے پولیس پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

پولیس کے مطابق وکرم اگروال مییپّن کے دوست ہیں اور دونوں سے ایک ساتھ پوچھ گچھ میں اہم سوالات کے جواب مل سکتے ہیں۔

بھارتی کرکٹ بورڈ کے سربراہ این شری نواسن کے داماد میپّن کو 25 مئی کو گرفتار کیا گیا تھا۔

دوسری طرف وزیر اعظم منموہن سنگھ نے آئی پی ایل فکسنگ معاملے پر کہا ہے کہ سیاست اور کھیل کو ایک دوسرے سے الگ رکھا جانا چاہئے۔

ایک سوال کے جواب میں بھارتی وزیر اعظم نے کہا کہ اس معاملے میں جب تک تفتیش مکمل نہیں ہو جاتی اس وقت تک کچھ بھی کہنا مناسب نہیں ہوگا۔

ادھر دہلی کی پولیس بھی اس معاملے کے ہر پہلو کی تفتیش کر رہی ہے جس نے سپاٹ فکسنگ میں ملوث سب سے پہلے راجستھان رائلز کے ٹیم کے تین کھلاڑیوں کو گرفتار کیا تھا۔

اسی بارے میں