’سپاٹ فکسنگ کے واقعات مایوس کن ہیں‘

بھارتی کرکٹ پریمیئر لیگ آئی پی ایل میں سپاٹ فکسنگ کا معاملہ سامنے آنے کے بعد سینئر کھلاڑیوں پر یہ سوال اٹھ رہے تھے کہ وہ اس معاملے پر کیوں خاموش ہیں۔

گزشتہ دنوں بھارتی کپتان مہندر سنگھ دھونی نے چیمپئنز ٹرافی کے لیے انگلینڈ روانہ ہونے سے پہلے پریس کانفرنس میں بھی اس معاملے پر کچھ نہیں کہا۔

لیکن اب ماسٹر بلاسٹر سچن تندولکر نے اس معاملے پر کہا ہے کہ گزشتہ کچھ دنوں کے واقعات حیران کرنے والے اور مایوس کن ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ لاکھوں کرکٹ کے شائقین کے اعتماد کو بحال کرنے کی ضرورت ہے۔ سچن نے کہا ہے کہ اہلکار اس معاملے کی جڑ تک جائیں اور یہ یقین ہے کہ کرکٹ کی ساکھ قائم رہے۔

’اس وقت مجھے کافی تکلیف ہوتی ہے جب کرکٹ غلط وجوہات کی وجہ سے سرخیوں میں آتا ہے۔ گزشتہ دو ہفتوں کے واقعات حیران کرنے والے اور مایوس کن رہے ہیں۔ کرکٹر کے طور پر ہمیں ہمیشہ یہ سکھایا جاتا ہے کہ میدان میں جا کر جدوجہد کرو، اپنا بہترین کھیل پیش کرو۔‘

سپاٹ فکسنگ پر سچن تندولکر کا بیان اس لئے بھی اہم ہے کیونکہ ابھی تک موجودہ کرکٹروں میں سے کسی نے اس معاملے پر اپنی خاموشی نہیں توڑی ہے۔

انگلینڈ روانہ ہونے سے پہلے ہندوستانی کپتان مہندر سنگھ دھونی سے اس معاملے پر کئی بار سوال پوچھے گئے لیکن انہوں نے کچھ نہیں کہا۔

تاہم برمنگھم پہنچنے کے بعد پریس کانفرنس میں دھونی نے اتنا ضرور کہا کہ ہندوستانی کرکٹروں کی ساکھ ختم نہیں ہوئی ہے اور کچھ لوگ دوسروں کے مقابلے ذہنی طور پر تھوڑا کمزور ضرور ہوتے ہیں۔

اسی بارے میں