ریکارڈز سوچ کر نہیں بنائے جاتے: شاہد آفریدی

Image caption آفریدی نے 314 چھکے ون ڈے انٹرنیشنل، 52 چھکے ٹیسٹ کرکٹ اور 34 چھکے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں مارے ہیں

پاکستان کے آل راؤنڈر شاہد آفریدی لیگ سپنر کی حیثیت سے بین الاقوامی کرکٹ میں متعارف کرائے گئے تھے لیکن انھوں نے اپنا پہلا تعارف ایک بے رحم بلے باز کے طور پر کرایا۔

شاہد آفریدی نے اپنی پہلی ہی اننگ میں صرف 37 گیندوں پر ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ کی تیز ترین سنچری بنا ڈالی۔

11 چھکوں اور 6 چوکوں کا یہ طوفان سری لنکا کے ہر بالر کو بہا لےگیا تھا۔ ان کی جارحیت کی لپیٹ میں سنتھ جے سوریا بھی آئے تھے جنھوں نے صرف چھ ماہ پہلے ہی سنگاپور میں پاکستانی بالروں کی بے دردی سے پٹائی کرتے ہوئے 48 گیندوں پر تیز ترین سنچری بنائی تھی لیکن آفریدی نے ان سے یہ ریکارڈ چھین لیا۔

یہ سنتھ جے سوریا ہی ہیں جن کے ون ڈے میں سب سے زیادہ مجموعی چھکوں کے ریکارڈ کو بھی شاہد آفریدی نے اپنے نام کیا اور اب وہ بین الاقوامی کرکٹ میں 400 چھکے لگانے والے پہلے بلے باز بن چکے ہیں۔

’میں ہوں شاہد آفریدی‘ آفریدی کی کہانی نہیں‘

شاہد آفریدی کا پاکستانی میڈیا ٹرائل

آفریدی اقوامِ متحدہ کے خیرسگالی سفیر

آفریدی نے 314 چھکے ون ڈے انٹرنیشنل، 52 چھکے ٹیسٹ کرکٹ اور 34 چھکے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں مارے ہیں۔

کوئی ایسا چھکا جو نہ بھول پائے ہوں، کوئی ایسا بالر جس کی درگت بنا کر مزاآیا ہو؟ بی بی سی کے اس سوال پر آفریدی سوچنے میں زیادہ وقت نہیں لیتے اور انضمام الحق کی قیادت میں سنہ 2005 کا آسٹریلوی دورہ یاد کرتے ہیں۔

’ہوبارٹ میں کھیلے جانے والے ون ڈے میں، میں نے میک گرا کو دو چھکے اور تین چوکے لگائے تھے جبکہ بریٹ لی کو بھی دو چھکے اور ایک چوکا لگایا تھا۔ اس اننگ میں میں نے صرف 26 گیندیں کھیلی تھیں اور 56 رنز بنائے تھے‘۔

شاہد آفریدی چھکوں کے اعتبار سے اپنی دوسری بہترین کارکردگی سنہ 2010 کے ایشیا کپ میں سری لنکا کے خلاف قرار دیتے ہیں۔

’جب آپ کسی بھی ورلڈ کلاس بالر کے خلاف اچھی کارکردگی دکھاتے ہیں تو بہت خوشی ہوتی ہے۔ مرلی جیسے بولر کو چھکا مارنا آسان نہیں لیکن میں نے 109 رنز کی اننگز میں انھیں پانچ چھکے مارے تھے۔‘

چار سو چھکوں کے عالمی ریکارڈ کو شاہد آفریدی ایک اہم سنگ میل سمجھتے ہیں۔

’ریکارڈز سوچ کر نہیں بنائے جاتے یہ خوش قسمت کرکٹرز کے حصے میں آتے ہیں کیونکہ یہ کسی کارنامے سے کم نہیں ہوتے۔ میں نے ہمیشہ ریکارڈز سے زیادہ اس بات پر توجہ دی ہے کہ میری کارکردگی ٹیم کے کام آئے اور وہ جیتے‘۔

شاہد آفریدی کی کاررکردگی پر کئی سوالات اٹھتے رہتے ہیں اس کے باوجود شائقین کا ایک بڑا طبقہ انھیں آج بھی پسند کرتا ہے۔

کرکٹ کی سٹیبلشمنٹ سے ان کے تعلقات ڈاواں ڈول کیوں رہتے ہیں کے جواب میں انہوں نے کہا ’مجھے اس طرح کی صورت حال میں بڑا مزا آتا ہے کیونکہ ضروری نہیں کہ ہر شخص آپ کو پسند کرے کچھ لوگ آپ کے مخالف بھی ہوتے ہیں۔ میری ہمیشہ سے کوشش رہتی ہے کہ میں ایسے لوگوں کو اپنی کارکردگی سے جواب دوں۔ مجھے چیلنجز قبول کرنا اچھا لگتا ہے‘۔

اسی بارے میں