گیرتھ بیل سب سے مہنگے کھلاڑی

ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ نےگیرتھ بیل کو 85.3 ملین پاؤنڈ میں خرید لیا ہے جس کے بعد وہ دنیا کے مہنگے ترین کھلاڑی بن گئے ہیں۔

ایک ہزار پاؤنڈ لینے والے ایلف کامن سے لے کر بارسلونا کے ساتھ 9,22,000 برطانوی پاؤنڈ کا معاہدہ کرنے والے جوہان کرویف اور اب گیرتھ بیل کی 85.3 ملین پاؤنڈ میں ریال میڈرڈ کے ساتھ معاہدہ۔ فٹبال کلب ہر دور میں دنیا کے بہترین کھلاڑیوں کے لیے بڑی رقمیں خرچ کرتے رہے ہیں۔

ریکارڈ معاہدے

فروری سنہ 1905 میں ایلف کامن وہ پہلے کھلاڑی تھے جنہیں مڈلزبرا نے سندرلینڈ سے ایک ہزار پاؤنڈ میں خریدا تھا۔

یوراگوئے سے تعلق رکھنے والے لیورپول کے سٹرائیکر سے متعلق اس تبادلے سیزن میں کافی خبریں آتی رہیں ہیں لیکن سنہ1961 میں سپین سے تعلق رکھنے والے ان کے ہم نام تھے جو شہ سرخیوں میں رہے۔ انہوں نے بارسلونا سے انٹر میلان تبادلے کے لیے 152,000 پاؤنڈ کا معاہدہ کیا تھا اور اپنی نئی ٹیم کو تین لیگ ٹائٹل اور دو یورپی کپ جیتنے میں مدد کی۔

Image caption میراڈونا تاریخ میں دو مرتبہ ریکارڈ توڑنے والے واحد کھلاڑی ہیں

بارسلونا سنہ 1973 میں ایک مرتبہ پھر تبادلے کے ریکارڈ معاہدے میں شامل تھا اس مرتبہ بارسلونا نے ڈچ کھلاڑی جوہان کریوف کو 9,22,000 پاؤنڈ میں اجیکس سے خریدا۔ کریوف نے پانچ سال تک بارسلونا کے لیے کھیلا جس دوران کلب نے ایک لیگ ٹائنل بھی جیتا۔

کریوف کے بارسلونا تبادلے کے دو سال بعد یہ ریکارڈ پھر ٹوٹ گیا۔ فٹبال کی دنیا میں پہلی مرتبہ کسی کھلاڑی کو ایک ملین پاؤنڈ میں خریدا گیا۔ اٹلی کے گیوسپ سوولڈی نے نیپولی سے 1.2 ملین پاؤنڈ کا معاہدہ کیا۔

تاریخ میں صرف میراڈونا وہ کھلاڑی ہیں جنہوں نے دو مرتبہ یہ ریکارڈ توڑا ہے۔ انہوں نے سنہ 1982 میں بارسلونا کے ساتھ تین سو ملین پاؤنڈ کا معاہدہ کیا تھا۔ تاہم وہ بارسلونا کے لیے صرف دو سال کھیلے جس کے بعد نیپولی نے انہیں اپنے کلب میں لانے کے لیے پانچ میلن پاؤنڈ کا معاہدہ کیا۔

پرتگال کے سٹار کھلاڑی لوئس فیگو سنہ 2000 میں بارسلونا کو چھوڑ کر ریال میڈرڈ چلے گئے اور فٹبال کے شائقین کو حیران کر دیا تھا۔ ریال میڈرڈ نے اپنے حریف کلب کو اس معاہدے کے لیے 37 ملین پاؤنڈ دیے تھے۔ ریال میڈرڈ نے آج تک پانچ ٹرانسفر ریکارڈ توڑے ہیں اور یہ اس سلسلے کی پہلی کڑی تھی۔

انہوں نے ایک سال بعد فرانس کے کھلاڑی زین الدین زیدان کے ساتھ 45.6 ملین پاؤنڈ کا معاہدہ کر کے اپنا ہی ریکارڈ توڑ دیا۔

سنہ 2009 میں ریال میڈرڈ نے دنیا کو ایک مرتبہ نہیں بلکہ دو مرتبہ حیران کیا۔ کاکا کو اے سی میلان سے 56 ملین پاؤنڈ میں خرید کر ان کا دل نہیں بھرا اور وہ کرسٹیانو رونالڈو کو مانچسٹر یونائیٹڈ سے 80 ملین پاؤنڈ کے عوض اپنے کلب میں لے آئے۔

گیرتھ بیل

Image caption ٹوٹنہم نے دو ہزار سات میں بیل کے ساتھ دس ملین پاؤنڈ کا معاہدہ کیا تھا

ٹوٹنہم کے لیے کھیلنے سے پہلے بیل نے اپنے کیریئر کا آغاز ساؤتھ ہینپٹن کے ساتھ کیا تھا۔ ویلز سے تعلق رکھنے والے بیل کا نام اس وقت شہہ سرخیوں میں آیا جب انہوں نے سنہ 2010 میں انٹر میلان کے خلاف تین گول کیے تھے۔ ٹوٹنہم کی ٹیم وہ میچ تین کے مقابلے میں چار گول سے ہار گئی تھی لیکن بیل کو دنیا جاننے لگی تھی۔

چوبیس سالہ بیل نے گزشتہ سال انگلش پریمیئر لیگ میں شاندار کارکردگی دکھائی تھی۔ انہوں نے اپنی ٹیم کو فتح دلانے کے لیے نو گول کیے تھے جو کسی بھی کھلاڑی سے زیادہ تھے۔ بیل نے 33 میچوں میں 133 شاٹس لگائیں اور 21 گول سکور کیے۔

انہوں نے میدان میں صرف چار مرتبہ گول کرنے میں مدد کی لیکن اپنے ساتھیوں کو گول کرنے کے لیے 75 مواقع فراہم کیے جو کہ میسی (47) اور رونالڈو (63) سے زیادہ ہیں۔

کھلاڑیوں نے کیا کہا۔۔۔۔

سنہ انیس سو نوے میں اٹلی کے کھلاڑی روبرٹو باجیو کے جووینٹس کے ساتھ آٹھ ملین پاؤنڈ کے معاہدے پر ان کے کلب فیورینٹینا کے مداحوں نے مظاہرے کیے جس پر ان کا کہنا تھا کہ ’ مجھے اس ٹرانسفر کے لیے مجبور کیا گیا تھا‘۔

بارسلونا کے کھلاڑی فیگو کے ریال میڈرڈ تبادلے پر اس وقت کے کلب کے صدر کا کہنا تھا کہ ’ہم کچھ نہیں کرنے والے اور میں نہیں چاہتا کہ لوگ اسے دھمکی سمجھیں۔ میں یہ کبھی نہیں بھولوں گا۔ جس نے میرے ساتھ ایسا کیا کیا اسے اس کی قیمت چکانی ہوگی۔‘

دو ہزار نو میں کاکا کا کہنا تھا کہ اے سی میلان میں مالی مشکلات کی وجہ سے وہ ریال میڈرڈ کے ساتھ معاہدہ کرنے پر مجبور ہوئے ہیں۔ انہوں نے ریال میڈرڈ کے ساتھ چھپن ملین پاؤنڈ کا معاہدہ کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا ’میں رکنا چاہتا تھا لیکن دنیا میں جاری بحران میرے فیصلے پر اثر انداز ہوا ہے۔ مجھے معلوم تھا کہ میں صرف ریال میڈرڈ جیسے کلب کے لیے میلان کو چھوڑوں گا۔‘

انگلش فٹبال کلب مانچسٹر یونائیٹڈ کے اس وقت کے مینیجر سر ایلکس فرگوسن کا رونالڈو کے ممکنہ تبادلے اور ریال میڈرڈ جانے کے بارے میں کہنا تھا کہ ’آپ کو لگتا ہے کہ میں ان بلوائیوں کے ساتھ معاہدہ کروں گا؟ اس کا کوئی امکان نہیں۔ میں ان کو وائرس بھی نہیں بیچوں گا۔‘

اسی بارے میں