2020 اولمپک مقابلوں کی میزبانی کا فیصلہ

Image caption استنبول، ٹوکیو اور مڈریڈ اس مرتبہ میزبانی کے حقوق کے امیدوار شہر ہیں

آئندہ چند روز میں آرجنٹینا کے شہر بیونس ایریس میں سنہ دو ہزار بیس کے موسمِ گرما کے اولمپک اور پیرالمپک مقابلوں کی میزبانی کے بارے میں فیصلہ کیا جائے گا۔

سنیچر کو اس حوالے سے اعلان متوقع ہے۔ استنبول، ٹوکیو اور مڈریڈ اس مرتبہ میزبانی کے حقوق کے امیدوار شہر ہیں۔

بین الاقوامی اولمپک کمیٹی کے اراکین یہ بھی فیصلہ کریں گے کہ سکوائش، بیس بال، سافٹ بال یا کشتی رانی میں سے کس کھیل کو دو ہزار بیس کے اولمپک مقابلوں میں شامل کیا جائے۔ اس کے علاوہ بین الاقوامی اولمپک کمیٹی کے نئے صدر کا انتخاب بھی کیا جائے گا۔

میزبانی کے امیدوار تین شہروں کو کئی مشکلات کا سامنا ہے۔

استنبول کی دو ہزار بیس کی مہم کو اس وقت نقصان پہنچا جب اس سال شہر میں سیاسی عدم استحکام کی وجہ سے مظاہرے ہوئے جن میں کچھ مجوزہ اولمپک سٹیڈیم کے مقامات پر بھی تھے۔

مڈریڈ کی امیدواری کو سپین کی معیشت کے برے حال اور ملک میں بڑھتی ہوئی بے روز گاری کی وجہ سے دشواری کا سامنا ہے۔ ہسپانوی دارالحکومت نے جوابی طور پر تجویز پیش کی ہے کہ اولمپک مقابلوں میں اس مرتبہ میانہ روی سے کام لیتے ہوئے کم خرچ کیا جائے، موجودہ سٹیڈیمز کا استعمال کیا جائے اور لندن دو ہزار بارہ کے مقابلے میں ایک چوتھائی خرچ پر یہ مقابلے کروائے جائیں۔

ٹوکیو اب تک تینوں شہروں میں سے بہترین شہر معلوم ہوتا تھا تاہم فوکوشیما جوہری پلانٹ سے تابکاری کے اخراج کی خبروں کے بعد ٹوکیو کی امیدواری کو بھی مشکلات ہیں۔ ٹوکیو کے حکام نے اولمپک کمیٹی کے ان خدشات کو دور کرنے کے لیے خط بھی لکھا ہے۔

لندن دو ہزار بارہ، ریو دو ہزار سولہ اور کھیلوں کے مقابلوں کی میزبانی کے لیے دیگر کئی کامیاب مہمات چلانے والی کمپنی ویرہ کمیونیکیشن کے سربراہ مائک لی کا کہنا ہے کہ تین شہروں میں سے کوئی بھی کامیاب ہو سکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’تینوں شہروں کی امیدواری کی ٹیمیں مختلف خدشات کی وجہ سے دفاعی انداز میں کام کرنے پر مجبور ہوگئیں ہیں۔ مگر ابھی بھی کامیابی کے امکانات سب کے لیے ہیں اور آخری دو روز کی کاوشیں اور حتمی پریزنٹیشنز انتہائی اہم ہوں گی۔‘

اولمپک مقابلوں میں ایک اور اضافی کھیل شامل کرنے کا بھی فیصلہ کیا جا رہا ہے۔ فروری میں کشتی کے کھیل کو ان مقابلوں سے خارج کر دیا گیا تھا تاہم اس کو دوبارہ شمولیت کے لیے کوشش کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

یہ فیصلہ عالمی اولمپک کمیٹی کا ایکزیکٹو بورڈ تمام کھیلوں کی بین الاقوامی فیڈریشنوں کی جانب سے تیس منٹ کی پریزنٹیشنز کے بعد کرے گا۔

بیجنگ میں دو ہزار آٹھ کے اولمپکس کے بعد بیس بال اور سافٹ بال کو مقابلوں سے خارج کر دیا گیا تھا تاہم اب وہ مجموعی طور پر شمولیت کی کوشش کر رہے ہیں۔ البتہ سکائش کبھی بھی اولمپکس میں شامل نہیں رہا مگر دولتِ مشترکہ کے کھیلوں میں کھیلا جاتا ہے۔

ادھر اولمپک کمیٹی کے صدر کی تعنیاتی کا فیصلہ بھی کیا جانا ہے۔ نئے صدر کو دو ہزار سولہ میں ریو مقابلوں کے حوالے سے مسائل اور روس میں ہم جنس مخالف قوانین کی مشکلات کا سامنا ہوگا۔

اسی بارے میں