آئی پی ایل کے موجد پر تاحیات پابندی

Image caption للت مودی نے ہی آئی پی ایل کی شروعات کی تھی

بھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ نے نظم و ضبط کی خلاف ورزی کے الزام میں انڈین پریمیئر لیگ کے سابق کمشنر للت مودی پر تاحیات پابندی لگا دی ہے۔

یہ فیصلہ بدھ کو چینئی میں بی سی سی آئی کے خصوصی اجلاس میں کیا گیا۔

ادارے کے بیان کے مطابق انتظامی کمیٹی کی رپورٹ پر غوروخوض کے بعد یہ اہم فیصلہ کیا گیا۔

اس فیصلے کے بعد للت مودی اب بی سی سی آئی میں کبھی کسی عہدے پر فائز نہیں ہو پائیں گے۔

بی سی سی آئی کی جنرل میٹنگ میں منظور کی جانے والی تجویز میں کہا گیا ہے کہ ’للت مودی ڈسپلن کی خلاف ورزی اور خراب رویے کے مجرم ہیں اور اس بورڈ کے قاعدہ 32 کے تحت دی گئی طاقت کے تحت للت مودی کو بی سی سی آئی سے نکالا جاتا ہے۔‘

تجویز میں مزید کہا گیا ہے: ’للت مودی کے بطور منتظم تمام اختیارات واپس لے لیے جائیں گے۔ وہ مستقبل میں کوئی عہدہ حاصل نہیں کر سکیں گے، نہ کسی کمیٹی میں شامل ہو سکیں گے اور نہ ہی بورڈ کے رکن یا معاون رکن بن سکیں گے۔‘

بورڈ کے اس اجلاس پر 21 ستمبر کو للت مودی کو پٹیالہ ہاؤس کورٹ سے حکمِ امتناعی مل گیا تھا لیکن دہلی ہائی کورٹ نے منگل کو بی سی سی آئی کے حق میں فیصلہ سنایا اور اجلاس کے انعقاد کی اجازت دی تھی۔

للت مودی اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ گئے لیکن سپریم کورٹ نے کہا کہ مودی کو بی سی سی آئی کے سالانہ عام اجلاس میں پیش ہونا چاہیے۔

عدالت نے یہ بھی کہا کہ یہ بورڈ کا اندرونی معاملہ ہے۔

خیال رہے کہ للت مودی نے ہی آئی پی ایل کا آغاز کیا تھا اور وہ پہلے تین سیزنوں میں اس کے کمشنر بھی رہے۔

لیگ کے معاملات میں مالی بے ضابطگیوں اور دو نئی ٹیموں کی نیلامی کے دوران غلط طریقے اپنانے پر آئی پی ایل 2010 کے انعقاد کے بعد انہیں معطل کر دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں