پاکستان کرکٹ بورڈ کے معاملات نگراں کمیٹی کے حوالے

Image caption وزیراعظم نواز شریف کے اس فیصلے کے بعد پاکستانی کرکٹ بورڈ کا گورننگ بورڈ اب ختم ہو گیا ہے

پاکستان کے وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف نے پاکستان کرکٹ بورڈ کا انتظام چلانے کے لیے پانچ رکنی ایڈہاک منیجمنٹ کمیٹی قائم کر دی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ یہ قدم اسلام آباد ہائی کورٹ میں زیرِ سماعت مقدمے کے پیش نظر اٹھایا گیا ہے۔

کرکٹ بورڈ میں انتخابات کرانے کا حکم

پریس ریلیز کے مطابق اب نواز شریف پاکستان کرکٹ بورڈ کے پیٹرن انچیف ہوں گے جبکہ پی سی بی کے نگراں چیئرمین نجم سیٹھی کو اس کمیٹی کا چیئرمین مقرر کیا گیا ہے۔

کمیٹی کے دیگر ارکان میں شہریارخان، ہارون رشید، ظہیر عباس اور نوید چیمہ شامل ہیں۔

اس فیصلے کے بعد پاکستانی کرکٹ بورڈ کا گورننگ بورڈ اب ختم ہو گیا ہے۔

واضح رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے نجم سیٹھی کو نگراں چیئرمین قرار دیتے ہوئے کوئی بھی بڑا فیصلہ کرنے سے روک دیا ہے اور ساتھ ہی انہیں نوے دن میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے الیکشن کرانے کے لیے کہا ہے یہ مدت اٹھارہ اکتوبر کو ختم ہو رہی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے روزمرہ کے ملکی اور بین الاقوامی معمولات چلانے کے لیے پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔

چونکہ آئی سی سی کا اجلاس اٹھارہ اور انیس اکتوبر کو لندن میں ہونے والا ہے لہٰذا کمیٹی نے متفقہ طور پر نجم سیٹھی کو چیئرمین مقرر کر دیا ہے اور وہی آئی سی سی کے اجلاس میں پاکستان کرکٹ بورڈ کی نمائندگی کرینگے۔

ایڈہاک کب لگائی گئی

نامہ نگار عبدالرشید شکور کے مطابق یہ پانچواں موقع ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ پر ایڈہاک لگائی ہے۔

1960سے 1963 تک جسٹس کارنیلئس ایڈہاک کمیٹی کے سربراہ رہے تھے۔

1978سے1980 تک چوہدری محمد حسین اور کے ایم اظہر ایڈہاک کمیٹی کے سربراہ رہے۔

1994میں پاکستان کرکٹ بورڈ پر لگنے والی تیسری ایڈہاک کمیٹی کے سربراہ جاوید برکی تھے۔

1999میں پاکستان کرکٹ بورڈ کی ایڈہاک کمیٹی کی باگ دوڑ پہلے مجیب الرحمن اور پھر ڈاکٹر ظفرالطاف نے سنبھالی۔

اسی بارے میں