جے پور میں بھارت کی شاندار فتح

Image caption روہت شرما نے اپنی اننگز میں سترہ چوکے لگائے

آسٹریلیا کے خلاف جے پور میں کھیلے جانے والے ایک روزہ میچ میں بھارت نے تین سو ساٹھ کا ہدف صرف ترتالیس اعشاریہ دو اوور اور ایک وکٹ کے نقصان پر حاصل کرکے سیریز ایک ایک سے برابر کر دی ہے۔

ورات کوہلی اور روہت شرما نے شاندار سنچریاں سکور کئیں اور دونوں کھلاڑی آؤٹ نہیں ہوئے۔

واحد آوٹ ہونے والے کھلاڑی شیکر دھون تھے انہوں نے بھی پچانوے رنز بنائے۔

بھارتی اوپنرز نے بڑے جارحانہ انداز میں تین سو ساٹھ کے ہدف کا پیچھا شروع کیا ہے روہت شرما نے ایک سو دو گیندوں پر اپنی سنچری مکمل کی۔ انہوں نے مجموعی طور پر ایک سو چوالیس رن بنائے اور ایک سو تیس گیندوں کا سامنا کیا۔

شرما نے سترہ چوکے اور چار چھکے لگائے۔

ورات کوہلی نے صرف باؤن گیندوں میں اپنی سنچری بنائی۔ کوہلی نے اپنی اننگز میں سات چھکے اور نو چوکے لگائے۔

شیکر دھون قدر خوش قسمت رہے اور ان کا ایک نسبتاً آسان کیچ کیپر نے چھوڑ دیا۔ ایک شاٹ کھیلنے کی کوشش میں بال سیدھا اٹھا گیا اور کافی اونچائی پر چلا گیا کیپر نے سب کو روک دیا اور خود چند قدم دوڑ کر کیچ لینے کی کوشش کی لیکن وہ کامیاب نہ ہوئے اور گیند ان کے ہاتھوں سے گر گئی۔

Image caption کوہلی نے بھارت کی ٹیم میں تیز رفتار ترین سنچری بنانے کا وریندر سہواگ کا ریکارڈ توڑ دیا

اس کے بعد شیکر دھون نے واٹسن کے ایک اوور میں لگاتار تین چوکے لگائے۔

یہ اپنی نوعیت کا ایک انوکھا میچ تھا۔ اس میں آسٹریلیا کی طرف پہلے پانچ بلے بازوں نے نصف سنچریاں بنا کر ایک ریکارڈ قائم کیا۔ ایسا پہلی مرتبہ ہوا کہ کسی ٹیم کے پہلے پانچ بلے بازوں نے نصف سنچریاں بنائی ہوں۔

آسٹریلیا نے جارج بیلی کی ایک شاندار اننگز کی مدد سے بھارت کو تین سو ساٹھ رنز کا ہدف دیا تھا۔

آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا ہے اور یہ فیصلہ آسٹریلوی بلے بازوں نے درست ثابت کر دیا۔

آسٹریلیا کی طرف سےفنچ ، ہیوز ، واٹس، بیلی اورمیکس ویل نے نصف سنچریاں بنائیں۔

ان میں بیلی نے بانوے رن بنائے اور آوٹ نہیں ہوئے۔ انہوں نے بانوے رنز صرف پچاس گیندوں پر بنائے۔اس اننگز میں انہوں نے تین چھکے اور چھ چوکے لگائے۔ میکس ویل نے بتیس گیندوں پر باؤن رنز بنائے اور رن آؤٹ ہوئے۔

بھارت کے گیند بازوں کمار، شرما اور جادیجا کی زبردست دہنائی ہوئی اور ان تینوں نے ستر یا اس سے زیادہ رن دیئے۔ شرما نے نو اوور کیے اور ستر رن دیئے اور انھیں کوئی وکٹ نہیں ملی۔

ونےکمار بھی بہت مہنگے ثابت ہوئے اور انہوں نے نو اوور میں تہتر رن دیئے لیکن انہوں نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

واٹسن نے شاندار بلے بازی کرتے ہوئے صرف سینتالیس گیندوں پر اپنی نصف سنچری مکمل کر لی۔ لیکن وہ تریپن گیندوں پر انسٹھ رنز بنا کر آوٹ ہو گئے۔

دوسری طرف ہیوز نے بھی پر اعتماد انداز میں کھیلتے ہوئے ایک سو تین گیندوں پر تراسی رنز بنائے۔

واٹسن اور ہیوز کے بعد ان کی جگہ میکس ویل اور بیلی نے لے لی۔ دونوں نے چوکے چھکوں نے رنز بنانے کی رفتار کو چھ رن فی اوور کی اوسط سے نیچے نہیں گرنے دیا۔

ان دونوں کی جارحانہ بلے بازی کی وجہ سے آسٹریلیا نے پینتالیس اوور میں تین سو رنز بنائے۔ بیلی اور میکس ویل دونوں نے نصف سنچریاں مکمل کئیں۔ میکس ویل تریپن رنز بنانے کے بعد رن آؤٹ ہو گئے۔

دھونی نے سات گیند بازوں کو آزمایا لیکن کسی کی ایک نہ چل سکی۔

دوسرے ون ڈے کے لیے دونوں ممالک کی ٹیموں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔

سیریز کا پہلا میچ پونے میں کھیلا گیا تھا جو آسٹریلیا نے 72 رنز سے جیتا تھا۔

آسٹریلیا بھارت کے خلاف اس دورے میں سات ایک روزہ میچ کھیلے گا جو ڈے اینڈ نائٹ میچ ہوں گے۔

جے پور کے بعد باقی میچ موہالی، رانچی، کٹک اور ناگپور میں کھیلے جائیں گے۔

آسٹریلیا نے اس سے پہلے بھارت میں دو بار سات ون ڈے میچوں کی سیریز کھیلی ہے اور دونوں مرتبہ فتح اس کی ہی ہوئی ہے۔

سنہ 08_2007 میں آسٹریلیا نے بھارت کو چار دو جبکہ 10_2009 میں بھی اسی فرق سے شکست دی تھی۔

اسی بارے میں