پاکستانی بالنگ کا بہترین سپیل، آملہ بھی آؤٹ

Image caption مصباح الحق نے ٹیسٹ میچوں میں اپنی گزشتہ پانچ اننگز میں چار مرتبہ نصف سنچری بنائی ہے

ابوظہبی میں جاری پہلے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن کھیل ختم ہونے پر جنوبی افریقہ نے اپنی دوسری اننگز میں بہتر رنز بنائے ہیں اور اس کے چار کھلاڑی آؤٹ ہو گئے ہیں۔

اننگز کا آغاز سمتھ اور پیٹرسن نے کیا۔ پاکستان کی طرف سے محمد عرفان اور جنید خان نے بالنگ کا آغاز کیا لیکن جنید خان کے ایک اوور کے بعد ہی کپتان مصباح الحق نے سیعد اجمل کو بالنگ کے لیے بلا لیا۔

محمد عرفان نے ایک مرتبہ پھر شروع میں پاکستان کو وکٹ دلا دی۔ انہوں نے پیٹرسن کو آوٹ کیا۔ دوسری طرف جب جنوبی افریقہ کا سکور پچپن رن پر پہنچے تو اجمل نے پیٹرسن کو آوٹ کر دیا۔

کپتان مصباح نے ایک مرتبہ پھر جنید خان کو بالنگ کے لیے اور انھوں نے ژاک کیلس کو آؤٹ کر دیا۔ کیلس کوئی رن بنائے بنا آؤٹ ہوئے۔

ہاشم آملہ جنہوں نے پہلی اننگز میں سنچری بنائی تھی دوسری اننگز میں ذوالفقار بابر کا شکار بنے اور صرف دس رنز بنائے۔

اس سے قبل پاکستان کی پوری ٹیم چار سو بیالیس رن بنا کر آؤٹ ہو گئی اور یوں اس نے پہلی اننگز میں ایک سو ترانوے رن کی برتری حاصل کر لی۔

کپتان مصباح ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی چوتھی سنچری مکمل کرنے کے فوراً بعد ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

مصباح الحق ٹیسٹ کرکٹ میں اکیس نصف سنچریاں بنا چکے ہیں۔ انھوں نے ٹیسٹ میچوں میں اپنی گزشتہ پانچ اننگز میں چار مرتبہ پچاس سے زیادہ رنز بنائے ہیں۔

مصباح کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستان کے بلے باز جم نہ سکے اور سعید اجمل اور ذوالفقار بابر جلد آؤٹ ہو گئے۔

پاکستان کی اننگز کا آغاز خرم منظور اور نئے کھلاڑی شان مسعود نے کیا تھا۔ دونوں نوجوان کھلاڑیوں نے پاکستان کو ایک پراعتماد آغاز فراہم کیا اور سو رن سے زیادہ کی شراکت کی۔پاکستان کے اوپنرز کی طرف سے یہ جنوبی افریقہ کے خلاف دس برس بعد سو رنز سے زیادہ کی شراکت تھی۔

بدھ کو پاکستان نے اپنی پہلی اننگز تین وکٹ کے نقصان پر دو سو تریسٹھ رنز کے سکور پر دوبارہ شروع کی تو مصباح الحق اور گزشتہ روز ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی پہلی سنچری مکمل کرنے والے خرم منظور نے سکور میں مزید سینتیس رنز کا اضافہ کیا۔

جب پاکستان کا سکور دو سو نوے پر پہنچا تو خرم منظور ایک سو چھیالیس کے انفرادی سکور پر فیلینڈر کی گیند پر ژاک کیلس کو کیچ دے بیٹھے۔ یہ جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ میچ کی ایک اننگز میں کسی بھی پاکستانی بلے باز کا سب سے زیادہ سکور ہے۔

خرم منظور آؤٹ ہونے سے قبل دو سنچری پارٹنر شپس کا حصہ بنے۔ پہلے انہوں نے شان مسعود کے ساتھ پہلی وکٹ کے لیے 135 رنز کی شراکت قائم کی جبکہ بعد میں کپتان مصباح الحق اور خرم نے چوتھی وکٹ کے لیے 112 رنز بنائے۔

Image caption خرم منظور نے ٹیسٹ کرکٹ میں پہلی سنچری مکمل کی

ان کی جگہ آنے والے اسد شفیق نے دورۂ زمبابوے میں خراب کارکردگی کا ازالہ نصف سنچری بنا کر کیا۔ انہوں نے مصباح الحق کے ساتھ مل کر 82 رنز کی شراکت قائم کی اور خود 54 رنز بنا کر ڈومینی کی دوسری وکٹ بنے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے اب تک فیلینڈر اور ڈومینی نے دو، دو جبکہ مورکل نے ایک وکٹ حاصل کی ہے۔

پاکستان نے اس ٹیسٹ میں افتتاحی بلے بازوں کی نئی جوڑی شان مسعود اور خرم منظور کو آزمایا اور یہ دونوں اپنے انتخاب پر کھرا اترے۔

اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے اوپنر شان مسعود نے نصف سنچری بنائی اور وہ 75 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

تاہم ان کے علاوہ اپر بیٹنگ آرڈر میں شامل دونوں بلے باز اظہر علی اور یونس خان ناکام رہے اور بالترتیب 11 اور 1 رن پر پویلین لوٹے۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 249 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی تھی اور اس اننگز میں ہاشم آملہ سنچری بنا کر نمایاں بلے باز رہے تھے۔

جنوبی افریقہ کے اس دورے میں دونوں ممالک کے مابین دو ٹیسٹ میچ، پانچ ایک روزہ میچ اور دو ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے جائیں گے۔

ٹیسٹ کرکٹ کی عالمی درجہ بندی میں جنوبی افریقہ اس وقت پہلے نمبر پر ہے جبکہ پاکستان چھٹے نمبر پر ہے۔ اس سیریز میں فتح پاکستان کو ٹیسٹ رینکنگ میں دوبارہ چوتھی پوزیشن دلوا سکتی ہے جو کہ زمبابوے سے ٹیسٹ سیریز برابر ہونے کی وجہ سے اس سے چھن گئی تھی۔

اسی بارے میں