ابو ظہبی: سیریز میں برتری دلانے والا میچ

ہاشم آملہ اور ناصر جمشید ابو ظہبی میں ٹریننگ سیشن کے دوران
Image caption ہاشم آملہ پہلے ٹیسٹ میچ کے بعد پیٹے کی پیدائش کے سلسلے وطن واپس چلے گئے تھے

مصباح الحق خوش ہیں کہ پاکستانی ٹیم نے پہلے ایک روزہ میچ میں شکست کا بدلہ اگلے ہی میچ میں لے لیا لیکن انہیں اس بات کا بھی شدت سے احساس ہے کہ بیٹسمین بڑے سکور تک پہنچنے سے پہلے ہی وکٹیں گنوا دیتے ہیں اور اس کمزوری سے جتنی جلد چھٹکارا پالیا جائے، بہتر ہوگا۔

پانچ ایک روزہ میچوں کی یہ سیریز ایک ایک سے برابر ہے اور کسی بھی ٹیم کو برتری دلانے والا تیسرا میچ بدھ کو ابوظہبی میں کھیلا جائے گا۔ اسی میدان پر پاکستان نے پہلا ٹیسٹ میچ جیتا تھا۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستانی بیٹسمین اعتماد سے اپنی اننگز کا آغاز کرتے ہیں، سیٹ ہوجاتے ہیں لیکن جب اس اننگز کو بڑے سکور میں منتقل کرنے کا وقت آتا ہے تو وہ آؤٹ ہوجاتے ہیں۔ انہوں نے اس ضمن میں محمد حفیظ، احمد شہزاد اور خود اپنی مثال دی۔

اس سیریز میں دونوں ٹیمیں بیٹنگ کے مسائل میں گِھری ہوئی ہیں۔ اگر ایک جانب پاکستانی بیٹسمین بڑا سکور نہیں کر پا رہے ہیں تو دوسری جانب جنوبی افریقی بیٹسمینوں کے ہاتھ بھی پاکستان کی مؤثر بولنگ نے باندھ رکھے ہیں۔

پاکستانی سپنرز معمول کے مطابق اپنی ذمہ داری بخوبی نبھا رہے ہیں۔

Image caption سعید اجمل عالمی رینکنگ میں دوبارہ پہلے نمبر پر آگئے ہیں

شاہد آفریدی جن پر پہلے میچ میں اہم موقع پر وکٹ گنوانے پر کافی تنقید ہوئی تھی اور وسیم اکرم نے یہاں تک کہہ دیا تھا کہ انہیں گیارہویں نمبر پر بیٹنگ کرائی جائے وہ دو میچوں میں چھ وکٹیں حاصل کر کے نمایاں ہیں۔

سعید اجمل کی چھ وکٹیں بھی انہیں دوبارہ عالمی رینکنگ میں پہلے نمبر پر لے آئی ہیں۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم ہاشم آملہ کی واپسی سے بیٹنگ کی کارکردگی میں بہتری کی توقع کر رہی ہے۔

پہلے ٹیسٹ میچ میں سنچری سکور کرنے والے ہاشم آملہ بیٹے کی پیدائش کے سلسلے میں وطن چلے گئے تھے۔ جنوبی افریقہ نے دوسرے ٹیسٹ اور دونوں ون ڈے میچوں میں ان کی کمی شدت سے محسوس کی۔

ہاشم آملہ کی کوشش ہوگی کہ بڑا سکور کرنے کی عادت سے ٹیم کو فائدہ پہنچانے کے ساتھ ساتھ کھوئی ہوئی عالمی رینکنگ میں پہلی پوزیشن بھی دوبارہ حاصل کر لیں جو ان کے دو میچ نہ کھیلنے کے سبب وِراٹ کوہلی نے حاصل کر لی ہے۔

فاسٹ بولر ڈیل سٹین بھی دو میچوں کے آرام کے بعد پاکستانی بیٹسمینوں کے آرام میں خلل ڈالنے کے لیے دوبارہ میدان میں اتریں گے۔

اسی بارے میں