سیموئلز اور شلنگفرڈ کے مشکوک بالنگ ایکشن کی رپورٹ

Image caption شلنگفرڈ کی ’دوسرا‘ گیند پر شک کا اظہار کیا گیا ہے

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے مطابق ویسٹ انڈیز کے بالرز مارلن سیموئلز اور شین شلنگفرڈ کے مشتبہ غیر قانونی بالنگ ایکشن کی شکایت کی گئی ہے۔

آئی سی سی کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق بھارت اور ویسٹ انڈیز کے مابین کرکٹ سیریز کے دوسرے میچ کے دورے روز کے اختتام پرگراؤنڈ میں موجود ایمپائر رچرڈ کیٹل برو، ٹی وی ایمپائر وینت کولکرنی اور میچ ریفری اینڈی پائیکرافٹ نے یہ شکایت کی۔

اینڈی پائیکرافٹ نے اس ضمن میں میچ کے اختتام پر ان شکایات کی دستاویز ویسٹ انڈیز کی ٹیم کے مینجر کے حوالے کی ہے۔

بیان کے مطابق ایمپائر کی رپورٹ میں دو بالروں کے بارے میں تحفظات کا اظہار کیا ہے جس میں خاص کر سیموئلز کی’ تیز گیند‘ اور شلنگفرڈ کے’دوسرا‘ کا ذکر کیا گیا ہے۔

بیان کے مطابق کرکٹ کے قوانین کی شق 2.2 کے تحت کسی بین الاقوامی میچ میں بالر کے بارے میں شکایت سامنے کے بعد طریقۂ کار کے تحت اب ان بالروں کے بالنگ ایکشن کے بارے میں مزید جانچ پڑتال کی جائے گی۔

Image caption مارلن سیموئلز کے باؤلنگ ایکشن پر پہلے بھی تشویش کا اظہار کیا جا چکا ہے

ان کھلاڑیوں کو اپنے بالنگ ایکشن کے بارے میں غیر جانبدار تجزیاتی رپورٹ پیش کرنا ہو گی۔

یہ تجزیاتی رپورٹ 21 دنوں کے اندر مکمل ہو جانی چاہیے اور اس کے بعد 14 دن کے اندر اس کی رپورٹ آئی سی سی کو پیش کرنا ہو گی۔

آئی سی سی کے بیان کے مطابق اس آزادانہ تجزیاتی رپورٹ میں کھلاڑی کسی غیر قانونی بالنگ ایکشن میں ملوث پائے گئے تو ان پر بین الاقوامی میچوں میں بالنگ پر پابندی لگ سکتی ہے۔

دونوں کھلاڑیوں کو اس سے پہلے بھی غیر قانونی بالنگ ایکشن کی وجہ سے بین الاقوامی میچوں میں بالنگ کرنے سے روکا جا چکا ہے تاہم بعد میں ان کو اپنے بالنگ ایکشن کو درست کرنے کے حوالے سے اصلاح کے پروگرام اور مزید ٹیسٹ کرنے کی وجہ سے بالنگ کی اجازت دے دی گئی تھی۔

اسی بارے میں