’دوبارہ بھی فاسٹ بولر بننا پسند کروں گا‘

Image caption وقار یونس پانچویں پاکستانی کھلاڑی ہیں جنہیں آئی سی سی کے ہال آف فیم میں شامل کیا گیا ہے

وقار یونس کبھی شارجہ کرکٹ سٹیڈیم کے سٹینڈ میں بیٹھ کر عمران خان کو بولنگ کرتے دیکھا کرتے تھے پھر ایک وقت آیا کہ وہ انھی کی کپتانی میں پاکستان کی نمائندگی کر رہے تھے اور اب وہ عمران خان کے ساتھ آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل ہیں۔

وقار یونس اور ایڈم گل کرسٹ ہال آف فیم میں شامل

وقار یونس آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل ہونے والے پانچویں پاکستانی کرکٹر ہیں۔ ان سے قبل یہ اعزاز عمران خان، جاوید میانداد، حنیف محمد اور وسیم اکرم کو حاصل ہو چکا ہے۔

Image caption وقار اپنےدور کےتیز ترین بولروں میں سے ایک تھے

’میں اسے اپنی خوش قسمتی سمجھتا ہوں کہ حنیف محمد، عمران خان اور جاوید میانداد جیسے عظیم کھلاڑیوں کی فہرست میں مجھے بھی شامل کیا گیا ہے ۔ میں چند سال شارجہ میں رہا اور جب بھی پاکستانی ٹیم وہاں میچز کھیلتی میں سٹیڈیم جاکر عمران خان کو دیکھا کرتا تھا جن کےساتھ میرا کھیلنے کا خواب بھی پورا ہوا اور ہال آف فیم میں بھی میرا نام ان کے ساتھ درج ہوا ہے۔‘

وقار یونس کہتے ہیں کہ فاسٹ بولنگ سے انہیں جنون کی حد تک محبت ہے۔

’فاسٹ بولنگ کا اپنا ایک الگ مزا ہے۔ اس میں سنسنی خیزی ہے، جوش ہے۔ جب آپ کی تیز گیند پر بیٹسمین کی وکٹ دور جاگرتی ہے کسی کے پیڈ پر یا کسی کے سر پر گیند لگتی ہے تو ایک عجب سا احساس ہوتا ہے کہ ہر چیز آپ کے کنٹرول میں ہے۔ فاسٹ بولر کے طور پر میں نے ایک ایک لمحے سے لطف اٹھایا ہے اور میں دوبارہ فاسٹ بولر ہی بننا پسند کروں گا۔‘

وقار یونس نے ٹیسٹ کرکٹ میں 373 اور ون ڈے میں 416 وکٹیں حاصل کیں جبکہ فرسٹ کلاس کرکٹ میں ان کی وکٹوں کی تعداد 956 رہی۔اس شاندار کارکردگی پر وہ مطمئن ہیں:

’مجھے بین الاقوامی کرکٹ میں اپنی پہلی گیند اچھی طرح یاد ہے۔ سچن تندولکر کے ساتھ اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز مجھے جیسے کل ہی بات معلوم ہوتی ہے۔ میں نے ہی انہیں آؤٹ کیا تھا۔ گو کہ مجھے گلین میک گرا کی طرح اپنی ہر وکٹ تو یاد نہیں لیکن کئی وکٹیں ذہن میں محفوظ ہیں۔ یہ میرا اثاثہ ہیں یہ میری سخت محنت کا نتیجہ ہے۔‘

وقار یونس کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد بھی اس سے وابستگی کو کھیل سے اپنی محبت کا نتیجہ سمجھتے ہیں۔

’میں کرکٹ سے بہت محبت کرتا ہوں اسی لیے میں نے کپتان، کوچ، بولنگ کوچ، کمنٹیٹر ہر حیثیت میں اپنا ناطہ جوڑے رکھا ہے۔ یہ بہت ہی خوبصورت کھیل ہے۔‘

اسی بارے میں