ویسٹ انڈیز: شلنگفرڈ کی بولنگ پر پابندی

Image caption ویسٹ انڈیز سے تعلق رکھنے والے سالہ شین شلنگفرڈ اور سالہ مارلن سیموئلز کے مشتبہ بولنگ ایکشن کی دورۂ بھارت کے دوران ٹیسٹ سیریز میں شکایت کی گئی تھی

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ویسٹ انڈیز کے دو بولروں، آف سپنر شین شلنگفرڈ کے غیر قانونی بولنگ ایکشن کی وجہ سے انھیں معطل جب کہ مارلن سیموئلز کی ’تیزگیند‘ پر پابندی عائد کر دی ہے۔

خیال رہے کہ ویسٹ انڈیز سے تعلق رکھنے والے 30 سالہ شین شلنگفرڈ اور 32 سالہ مارلن سیموئلز کے مشتبہ بولنگ ایکشن کی دورۂ بھارت کے دوران ٹیسٹ سیریز میں شکایت کی گئی تھی۔

بھارت اور ویسٹ انڈیز کے مابین کرکٹ سیریز کے دوسرے میچ کے دوسرے روز کے اختتام پرگراؤنڈ میں موجود امپائر رچرڈ کیٹل برو، ٹی وی امپائر وینت کولکرنی اور میچ ریفری اینڈی پائیکرافٹ نے یہ شکایت کی تھی۔

اینڈی پائیکرافٹ نے اس ضمن میں میچ کے اختتام پر ان شکایات کی دستاویزات ویسٹ انڈیز ٹیم کے مینجر کے حوالے کیں تھیں۔

Image caption ان دستاویزات میں سیموئلز کی’ تیز گیند‘ اور شلنگفرڈ کے’دوسرا‘ کا ذکر کیا گیا تھا

ان دستاویزات میں سیموئلز کی’ تیز گیند‘ اور شلنگفرڈ کے’دوسرا‘ کا ذکر کیا گیا تھا۔

آئی سی سی کے مطابق مارلن سیموئلز اپنی ’تیز گیند‘ کرواتے وقت 15 ڈگری کی حد کو عبور کرتے تھے تاہم انھیں آف بریک بولنگ کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

دونوں کھلاڑی اس پابندی کے خلاف 14 روز کے اندر تحریری اپیل درج کر سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ ویسٹ انڈیر کی ٹیم ان دنوں نیوزی لینڈ کے دورے پر ٹیسٹ سیریز میں مصروف ہے۔

شین شلنگفرڈ اور مارلن سیموئلز نے نیوزی لینڈ کے خلاف جاری تین ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز کے پہلے دو میچوں میں شرکت کی تھی تاہم سیموئلز نے ان میچوں میں بولنگ نہیں کی تھی۔

ویسٹ انڈیر اور نیوزی کے درمیان تیسرا ٹیسٹ میچ جمعرات سے شروع ہو گا اور اس کے بعد ایک روزہ میچ اور ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے جائیں گے۔

دونوں کھلاڑیوں کو اس سے پہلے بھی غیر قانونی بالنگ ایکشن کی وجہ سے بین الاقوامی میچوں میں بالنگ کرنے سے روکا جا چکا ہے تاہم بعد میں ان کو اپنے بولنگ ایکشن کو درست کرنے کے حوالے سے اصلاح کے پروگرام اور مزید ٹیسٹ کرنے کی وجہ سے بولنگ کی اجازت دے دی گئی تھی۔

اسی بارے میں