جب تک کھیلوں گا چھکے مارتا رہوں گا: پیٹرسن

Image caption کیون پیٹرسن کو دوحاضر کے حارحانہ انداز کے بلے بازوں میں شمار کیا جاتا ہے

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے معروف بلے باز کیون پیٹرسن نے کہا ہے کہ وہ اپنی بیٹنگ کے دوران رسک لینے کی اپنی عادت سے باز نہیں آئیں گے۔

کیون پیٹرسن نے آسٹریلیا میں جاری ایشز سیریز کے تین میچوں کی چھ اننگز میں اب تک صرف 165 رنز بنائے ہیں۔

اگرچہ پیٹرسن اس سیریز کے دوران پانچ بار لیگ سائید پر کیچ آؤٹ ہوئے ہیں تاہم ان کا اصرار ہے کہ وہ 26 دسمبر سے شروع ہونے والے تیسرے ٹیسٹ میچ میں بھی اسی طرح بیٹنگ کریں گے۔

انھوں نے کہا ’میں نہیں جانتا کہ میرے بارے میں کتنے مضامین لکھے گئے جن میں کہا گیا ہے کہ میں کس طرح آؤٹ ہوا، اس کے باوجود میں مزید رسک لوں گا۔‘

خیال رہے کہ پرتھ میں کھیلے جانے والے تیسرے ٹیسٹ ميچ میں 150 رنز کی شکست کے بعد سیریز میں انگلینڈ ناقابل تسخیر صفر کے مقابلے تین کے فرق سے پیچھے رہ گیا ہے۔

اس میچ میں پیٹرسن وہیں پر کیچ آؤٹ ہوئے جہاں ریان ہیرس کو ان کے مخصوص شاٹ کے لیے کھڑا کیا گیا تھا۔

اس سیریز سے قبل کہا جا رہا تھا کہ پیٹرسن اپنے بہترین فارم میں ہیں لیکن ان کی اس کاکردگی کے بعد بہت سے لوگوں نے ایک ایسے کھلاڑی کے رویے کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے جس نے 102 ٹیسٹ میچوں میں آٹھ ہزار سے زیادہ رنز بنا رکھے ہیں۔

پیٹرسن نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’اس دن غلطی ہوئی تھی۔ میں نے کئی غلطیاں کی ہیں اور اس کی نشاندہی بھی کی گئی ہے تاہم کسی کے لیے میں اپنے کھیلنے کے انداز میں تبدیلی نہیں کروں گا کیونکہ میں اپنے اسی انداز کی وجہ سے خاصا کامیاب بھی رہا ہوں۔

’یہاں مسئلہ یہ نہیں ہے کہ میں ایسا نہیں کرسکتا بلکہ میرے اندر کچھ ہے جو خراب گیند کو دیکھ کر یہ کہتا ہے کہ اسے سزا ملنی چاہیے، میں ایسا ہی کرتا ہوں اور کامیاب رہتا ہوں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’پچھلی بار ایڈیلیڈ میں جب میں نے 227 رنز بنائے تھے تو میں دوہرٹی کی پہلی ہی گیند پر آوٹ ہوتے ہوتے بچا تھا، تاہم سب نے اسے میری بہترین اننگز میں سے ایک قرار دیا۔ اتار چڑھاؤ آتے رہتے ہیں اور یہ اس کھیل کا حصہ ہے۔‘

پیٹرسن نے کہا کہ ان کے خیال میں ’جس شاٹ پر میں پرتھ میں آؤٹ ہوا تھا اس میں کوئی رسک نہیں تھا۔ میں اس پر چھکا مار سکتا تھا اور میں جب تک کھیلوں گا چھکا مارتا رہوں گا۔‘

پیٹرسن نے گریم سوان سے متعلق تنازعے کو بھی مسترد کر دیا جس میں بعض لوگوں کا کہنا تھا کے سوان نے اس لیے اپنے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا ہے کہ ان پر تنقید کی گئی تھی۔

اسی بارے میں