شارجہ کی یہ جیت ہمیشہ یاد رہے گی، مصباح

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان کی کرکٹ ٹیم مصباح الحق کی قیادت میں 27 ٹیسٹ میچز کھیل چکی ہے جن میں سے 12 جیتے، سات ہارے ہیں اور آٹھ ڈرا ہوئے ہیں

پاکستان کی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ شارجہ ٹیسٹ کی دوسری اننگز شروع کرتے وقت یہ فیصلہ کر لیا گیا تھا کہ ہر قیمت پر جیتنے کی کوشش کی جائے گی چاہے اس کوشش میں نتیجہ دو صفر کیوں نہ جائے۔

مصباح الحق نے شارجہ سے بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ٹیم میٹنگ میں ہر کوئی مثبت سوچ اپنائے ہوئے تھا اور یہی فیصلہ ہوا کہ ہدف حاصل کرنے کی ہرممکن کوشش کی جائے گی اور ممکنہ شکست کی پروا نہیں کی جائے گی۔ بلے بازوں نے عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور ایک شاندار جیت سے سیریز برابر کردی۔

پاکستان کی کرکٹ ٹیم مصباح الحق کی قیادت میں 27 ٹیسٹ میچز کھیل چکی ہے جن میں سے 12 جیتے، سات ہارے ہیں اور آٹھ ڈرا ہوئے ہیں۔

مصباح الحق نے کہا کہ سرفرازاحمد اور اظہرعلی کی اہم شراکت سے رن ریٹ نیچے آ گیا جس سے کام آسان ہوگیا۔

انھوں نے پہلی اننگز میں سنچری بنانے والے احمد شہزاد اور فاسٹ بولر محمد طلحہ کی بھی تعریف کی اور کہا کہ اس ٹیم میں اکثریت ان کھلاڑیوں کی ہے جنھوں نے بڑی تعداد میں ٹیسٹ میچز نہیں کھیلے اسی وجہ سےٹیم اکثر مشکلات کا شکار ہو جاتی ہے اور اس کی کارکردگی میں تسلسل نہیں رہتا۔

ان کا کہنا تھا کہ اس کے باوجود اسی ٹیم نے انگلینڈ کے خلاف کلین سوئپ کیا اور جنوبی افریقہ جیسی بڑی ٹیم کے خلاف ٹیسٹ میچ بھی جیتا۔ان کھلاڑیوں کومستقل ٹیسٹ میچز کھیلنے کی ضرورت ہے تاکہ انھیں تجربہ حاصل ہوسکے۔

مصباح الحق نے کہا کہ انگلینڈ کے خلاف تین صفر کی جیت ان کے کریئر کی بہترین کارکردگی ہے لیکن شارجہ کی یہ جیت ایک بڑے ہدف کو حاصل کرنے کی وجہ سے انھیں ہمیشہ یاد رہے گی۔

انھوں نے کہا کہ خوشی اس بات کی بھی ہے کہ ٹیم نے جیت کے ساتھ کوچ واٹمور کو رخصت کیا ہے ان کے ساتھ دوسال بہت اچھے گزرے۔

مصباح الحق نے کہا کہ اس سال کے اواخر میں پاکستانی ٹیم کو آسٹریلیا کا مقابلہ کرنا ہے یہ ایک اہم سیریز ہوگی جس کے لیے سخت محنت اور تیاری کی ضرورت ہوگی تاہم متحدہ عرب امارات میں آسٹریلوی ٹیم کے لیے بھی پاکستانی سپنرز کا سامنا کرنا چیلنج ہوگا۔

اسی بارے میں