آئی پی ایل فکسنگ: سری نواسن کےداماد قصوروار

تصویر کے کاپی رائٹ csk
Image caption ابھی یہ نہیں معلوم کہ اس رپورٹ کے بعد سپریم کورٹ کیا کرے گی

بھارت میں آئی پی ایل میچوں میں سپاٹ فکسنگ اور سٹے بازی کے معاملات کی تحقیقات کرنے والی جسٹس موکول مودگل کمیٹی نے بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر این سری نواسن کے داماد اور چینئی سپر کنگ ٹیم کے نمائندے گرو ناتھ میپن کو سٹے بازی کا قصوروار قرار دیا ہے۔

کمیٹی کے اس فیصلے سے چینئي سپر کنگ ٹیم کو آئی پی ایل سے باہر کیا جا سکتا ہے۔

سپریم کورٹ کو سونپی گئی اس رپورٹ میں مودگل کمیٹی نے کہا ہے کہ گرو ناتھ میپن چینئی سپر کنگ کے واضح طور پر نمائندے تھے اور ٹیم ہر جگہ انہی کے نام سے جانی جا تی تھی۔ کمیٹی نے کہا ہے کہ مسٹر میپن میچوں کے درمیان غیر قانونی طور پر سٹے بازی میں ملوث تھے۔

جسٹس مودگل نے کہا ہے کہ ’سٹے بازی میں گروناتھ کےملوث ہونے کے ثبوت موجود ہیں۔‘

سری نواسن کے داماد گروناتھ کوگذشتہ برس ممبئی پولیس نے سٹے بازی کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور بعد میں ضمانت پر رہا ہوئے تھے۔

گرفتاری کے وقت سری نیواسن نے کہا تھا کہ میپن چینئی سپر کنگ ٹیم کے مالک نہیں ہیں اور وہ صرف کرکٹ کے جوشیلے مداح ہیں۔ لیکن تحقیقاتی کمیٹی نے کہا ہے کہ میپن ٹیم کا ’اصل چہرہ ہیں اور انہیں ہی ٹیم کے مالک کے طور جانا جاتا تھا۔‘

گذشتہ برس بہار کرکٹ ایسوی ایشن نے بھارتی کرکٹ بورڈ کی اس تفتیش کو چیلنج کیا تھا جس میں بورڈ کے صدر اور چینئی سپر کنگ ٹیم کو کلین چٹ دے دی گئی تھی۔ اس پٹیشن کی سماعت کے بعد سپریم کورٹ نے آئی پی ایل میں سپاٹ فکسنگ اور سٹے بازی کی تفتیش کے لیے گذشتہ برس ایک کمیٹی تشکیل دی تھی۔ اس کمیٹی نے اپنی یہ رپورٹ پیر کو جمع کی ہے۔

تحقیقاتی ٹیم نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے: ’آئی پی ایل میں کچھ سنگین نقائص ہیں جنھیں دور کرنے کی ضرورت ہے۔‘ کمیٹی نے گذشتہ چار مہینوں میں، آئی پی ایل ٹیموں کے مالکوں، انسداد بدعنوانی کے اہل کاروں، پولیس کے تفتیش کاروں اور سچن تیندولکر، راہل دراوڑ، انیل کمبلے اور سوروگانگولی جیسے کرکٹروں اور پردیپ میگزین جیسے سرکردہ سپورٹس صحافیوں سے بات چیت کے بعد سپاٹ فکسنگ اور سٹے بازے روکنے کے لیے بعض سفارشیں بھی کی ہیں۔

ابھی یہ نہیں معلوم کہ اس رپورٹ کے بعد سپریم کورٹ کیا کرے گی لیکن عرضی گزاروں کا کہنا ہے کہ آئندہ دنوں میں اس معاملے کی سماعت ہونے والی ہے۔

مودگل کمیٹی کی یہ رپورٹ ایک ایسے وقت میں آئی ہے جب آئندہ آئی پی ایل سیزن کے لیے کھلاڑیوں کی نیلامی کی تیاریاں ہو رہی ہیں۔ حال ہی میں بین الاقوامی کرکٹ کونسل کے ضوابط میں ترمیم کے بعد مسٹر سری نواسن کو کونسل کا آئندہ صدر منتخب کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں