قطر فٹبال کپ: ملازمین کی حفاظت کے لیے ’ورکرز چارٹر‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption قطر نے سنہ 2022 کے فٹ بال کپ کی میزبانی حاصل کرنے کے لیے آسٹریلیا، جاپان، جنوبی کوریا اور امریکہ کو بولی میں شکست دی تھی

مشرق وسطیٰ کے ملک قطر میں سنہ 2022 میں ہونے والے فٹبال کے عالمی کپ کے منتظمین نے غیر ملکی ملازمین کے حقوق کی حفاظت کے لیے ’ورکرز چارٹر‘ بنایا ہے۔

اطلاعات کے مطابق قطر میں گذشتہ سال مختلف تعمیراتی منصوبوں میں کام کرنے والے تقریباً 200 نیپالی ورکرز ہلاک ہو گئے تھے۔

بین الاقوامی ٹریڈ یونین کنفیڈریشن کا کہنا ہے کہ اگر قطر کے موجود قوانین رائج رہے تو سنہ 2022 تک مزید چار ہزار افراد ہلاک ہو سکتے ہیں۔

خیال رہے کہ قطر کی حکومت کو فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کو 12 فروری تک یہ بتانا ہے کہ وہ ورکروں کے حالاتِ کار کے بارے میں کیا اصلاحات کرے گی۔

50 صفحات پر مشتمل ’ورکرز چارٹر‘ کو بین الاقوامی لیبر آرگنائزیشن کی مدد سے بنایا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق قطر میں ورکروں کے غیر محفوظ حالاتِ کار کی وجہ سے گذشتہ سال کم سے کم 185 ورکرز ہلاک جب کہ اس سے کہیں زیادہ زخمی ہوئے تھے۔

قطر میں کام کرنے والے متعدد ورکروں کی رہائش کے حوالے سے بھی شکایات سامنے آ چکی ہیں۔

واضح رہے کہ ٹریڈ یونیینز اور انسانی حقوق کے گروہوں نے قطر کے ’کفالہ ایمپلائمنٹ سسٹم‘ پر تنقید کی ہے۔

اس نظام کے تحت غیر ملکی ورکر اپنی سپانسر کمپنیوں اور ایگزٹ ویزا کے ساتھ منسلک ہو جاتے ہیں جس کی وجہ سے ورکر اپنی کمپنی کی مرضی کے بغیر ملک نہیں چھوڑ سکتے۔

اس نئی دستاویز کو ’ورکرز ویلفیئر سٹینڈرڈز‘ کا نام دیا گیا ہے۔ ملازمین کی فلاح و بہبود کے معیار اور قواعد کی اس نئی دستاویز میں ان شرائط کا اندراج کیا گیا ہے جن کے تحت قطر کی عالمی کپ کی سپریم کمیٹی کپ کے انفراسٹرکچر کے منصوبوں کے لیے ٹھیکیداروں کے ساتھ معاہدے کرے گی۔

دوسری جانب قطر عالمی کپ کے لیے بنائی گئی سپریم کمیٹی کے سیکریٹری جنرل حسن الاثوادی کا کہنا ہے کہ فٹبال ٹورنامنٹ بے قصور افراد کے خون پر نہیں بنایا جائے گا۔

خیال رہے کہ قطر نے سنہ 2022 کے فٹ بال کپ کی میزبانی حاصل کرنے کے لیے آسٹریلیا، جاپان، جنوبی کوریا اور امریکہ کو بولی میں شکست دی تھی۔

اسی بارے میں