اچھا ہے کہ پہلا میچ بھارت کے خلاف ہے: محمد حفیظ

تصویر کے کاپی رائٹ ICC
Image caption ’پاکستان اس بات کو نظر انداز نہیں کرسکتا کہ جس ٹیم کو شکست دی اس میں کون تھا اور اب کی ٹیم میں کون کون شامل ہیں‘

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے ٹی ٹوئنٹی کپ میں پاکستان کے کپتان محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ بھارت کے ساتھ میچ میں بہت دباؤ ہوتا ہے اور اس ٹورنامنٹ میں کسی بھی ٹیم کو کمزور نہیں سمجھنا چاہیے۔

بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارت کے ساتھ میچ میں دباؤ تو بہت ہوتا ہے لیکن کھیلنے کا مزہ بھی آتا ہے۔

’مجھے خوشی ہے کہ ٹورنامنٹ میں پاکستان کا پہلا میچ ہی بھارت کے ساتھ ہے۔ اگر یہ میچ ہمارے لیے اچھا رہا تو ہم پر سے دباؤ کم ہو جائے گا۔‘

واضح رہے کہ ایشیا کپ میں پاکستان نے ایک روزہ میچ میں بھارت کو ایک دلچسپ مقابلے کے بعد شکست دی تھی۔

تاہم اس میچ کے بعد بھارت کی ٹیم میں مہندر سنگھ دھونی، ٹی ٹوئنٹی سپیشلسٹ سریش رائنا اور یوراج سنگھ کی واپسی ہوئی ہے۔

محمد حفیظ نے کہا کہ پاکستان اس بات کو نظر انداز نہیں کرسکتا کہ جس ٹیم کو شکست دی اس میں کون تھا اور اب کی ٹیم میں کون کون شامل ہیں۔

’میرے خیال میں جو ٹیم میں مدِمقابل آتی ہے وہ اس ملک کی بہترین ٹیم ہوتی ہے۔ ایشیا کپ میں بھارت کی بہترین ٹیم نے شرکت کی۔ ہم نے ان کو شکست دی۔‘

انہوں نے بھارتی ٹیم کے حوالے سے مزید کہا ’ٹیم سے کسی ایک کھلاڑی کا چلے جانا یا اس کی واپسی معنی نہیں رکھتا۔ لیکن چند اہم کھلاڑی ہوتے ہیں جن کی ٹیم میں واپسی اس ٹیم کے لیے بہت اچھی ہوتی ہے۔ اس حوالے سے دھونی کی کپتانی بہت اہم ہے۔‘

بھارت کے ساتھ میچوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے محمد حفیظ نے کہا سنہ 2012 میں بھارت کے دورے میں پہلا میچ بنگلور میں تھا۔

’ہم نے دیکھا کہ جب بھی ہم چوکا یا چھکا مارتے تو مجمع خاموش ہو جاتا تھا۔ ہم نے اس بات کو بہت انجوائے کیا کیونکہ جب بھی مجمع خاموش ہوتا تو ہمیں کہتے تھے کہ ہم ٹھیک کھیل رہے ہیں۔‘

ٹی ٹوئنٹی کپ کے گروپ ٹو میں بھارت اور پاکستان کے علاوہ آسٹریلیا اور ویسٹ انڈیز بھی ہیں۔

پاکستانی کپتان کا کہنا تھا کہ ان چاروں ٹیموں کا ایک گروپ میں ہونے کی وجہ ہی سے اس گروپ کو ’گروپ آف ڈیتھ‘ یعنی موت کا گروپ کہتے ہیں۔

’وہ ٹیمیں جو اس ٹورنامنٹ میں فیورٹ ہیں وہ اسی گروپ میں ہیں۔ میڈیا اور لوگ بھارت اور پاکستان کے میچ پر زیادہ توجہ دیں گے لیکن ہم صرف بھارت کے خلاف نہیں کھیلنے آئے۔ ہم اپنا بہترین کھیل پیش کریں گے۔ ہمارے پاس آسٹریلیا اور ویسٹ انڈیز کے لیے بھی پلان تیار ہے۔‘

شاہد آفریدی کے بارے میں بات کرتے ہوئے پاکستانی ٹیم کے کپتان نے کہا ’آفریدی فٹ ہے اور ہم نے ان کو تھوڑا زیادہ وقت دیا ہے تاکہ وہ بعد میں ٹیم میں شامل ہو سکیں۔ وہ ڈھاکہ 17 مارچ کو آ رہے ہیں۔‘

اسی بارے میں