پاکستانی ٹیم میڈیا سے دور دور

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے وارم اپ میچ میں صحافیوں کو اسوقت شدید مایوسی کا سامنا کرنا پڑا جب میچ کے بعد کھلاڑیوں کی پریس کانفرنس میں کوئی بھی پاکستانی کرکٹر میڈیا کے سامنے نہیں آیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption حفیظ پاکستان ٹی ٹوئنٹی کے کپتان ہیں اور انھوں نے پہلے وارم اپ میچ میں نصف سنچری سکور کی

شیربنگلہ اسٹیڈیم میرپور میں پیر کے روز وارم اپ میچ کے اختتام پر کھلاڑیوں کی پریس کانفرنس میں نیوزی لینڈ کے فاسٹ بولر ٹم ساؤتھی آئے اور صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیے جس کے بعد پاکستانی کھلاڑی کی باری تھی۔ صحافی انتظار کرتے رہے لیکن کافی دیر انتظار کے بعد انہیں بتایا گیا کہ پاکستانی ٹیم کی جانب سے کوئی بھی کھلاڑی پریس کانفرنس میں نہیں آرہا۔

آئی سی سی ایونٹس کے وارم اپ میچوں میں کھلاڑیوں کی پریس کانفرنس لازمی نہیں ہوتی لیکن تمام ٹیمیں میچوں کے بعد اپنے کسی نہ کسی کھلاڑی کو پریس کانفرنس میں بھیجتی ہیں۔

پاکستانی ٹیم کی منیجمنٹ نے ایشیا کپ کے دوران کسی بھی کھلاڑی کو انفرادی طور پرمیڈیا سے بات کرنے کی اجازت نہیں دی تھی لیکن حیران کن طور پر آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے پہلے وارم اپ میچ کے موقع پر بھی کسی کھلاڑی کو باقاعدہ پریس کانفرنس میں نہیں بھیجا گیا۔

آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شریک کئی ٹیموں نے ذرائع ابلاغ سے بہتر رابطے کے لیے باقاعدہ میڈیا منیجرز کی خدمات حاصل کررکھی ہیں لیکن پاکستانی ٹیم کے میڈیا کے معاملات بھی منیجر ذاکر خان نے سنبھال رکھے ہیں۔

اسی بارے میں