ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں دو میچز، چار ٹیمیں مد مقابل

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پہلے میچ میں لوگوں کی نظریں اگر ڈی ولیئرز اور سنگاکارا پر ہوں گی تو ملنگا اور سٹین پر بھی ہوں گي

بنگلہ دیش میں جاری ٹی ٹوئنٹی کے عالمی کپ میں سنیچر کو دو میچز کھیلے جا رہے ہیں۔ پہلا میچ سری لنکا اور جنوبی افریقہ کے درمیان ہے تو دوسرا مقابلہ انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہے۔

آج کے دونوں مقابلے بنگلہ دیش کے شہر چٹاگونگ میں کھیلے جا رہے ہیں۔ حال میں سری لنکا کی ٹیم کو زبردست فارم میں تصور کیا جا رہا ہے کیونکہ اس نے گذشتہ دنوں بھارت اور پاکستان دونوں کو واضح انداز میں شکست دے کر ایشیا کپ کا خطاب حاصل کیا تھا۔

دوسری جانب جنوبی افریقہ کی ٹیم عام طور پر اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتی رہی ہے تاہم وہ گذشتہ 16 برسوں میں آئی سی سی کے کسی بھی ناک آوٹ مقابلے میں کامیابی حاصل نہیں کر سکی ہے۔

یہ ميچ مقامی وقت کے مطابق ساڑھے تین بجے شروع ہو رہا ہے اور لوگوں کی نظریں اگر ڈی ولیئرز اور سنگاکارا پر ہوں گی تو ملنگا اور سٹین پر بھی ہوں گي۔

ایک عرصے سے سری لنکا کی بلے بازی کے معتبر ترین بلے باز کمارا سنگاکارا اور مہیلا جے وردھنے کا یہ آخری ٹی ٹوئنٹی ٹورنا منٹ ہوگا اس لیے امید کی جار رہی ہے کہ سری لنکا کی ٹیم انھیں شایان شان خراج عقیدت پیش کرنے کی کوشش کرے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption سنگاکارا اور مہیلا جے وردھنے ایک عرصے سے سری لنکا کی بیٹنگ کا ستون تصور کیے جاتے ہیں

سری لنکا کی ٹیم میں تجربہ اور نئے جوش کے ساتھ متوازن بیٹنگ اور بولنگ ہے۔ ٹیم کو اس ٹورنا منٹ میں انتہائی اہمیت کا حامل قرار دیا جا رہا ہے۔

گروپ اے کا دوسرا میچ انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان شام ساڑھے سات بجے شروع ہوگا۔

انگلینڈ کو اگر اپنے تیز بولروں پر بھروسہ ہوگا تو وہیں نیوزی لینڈ اپنے بلے بازوں کی اچھی فارم کے نتیجے میں پر اعتماد نظر آ رہی ہے۔

کرکٹ کے مبصرین کا کہنا ہے کہ یہ دونوں ٹیمیں دو مختلف ذہنی کیفیتوں میں ہیں۔ انگلینڈ کو جہاں آسٹریلیا زبردست شکست کا سامنا رہا ہے وہیں نیوزی لینڈ نے بھارت جیسی اہم ٹیم کو ہر شعبے میں شکست سے ہم کنار کیا ہے اور جیت کے لیے پرعزم نظر آ رہی ہے۔

تاہم یہ کسی سے بھی پوشیدہ نہیں کہ کرکٹ کا ہر میچ مختلف ہوتا ہے اور کبھی بھی کچھ بھی ہو سکتا ہے۔

انگلینڈ کی جانب سے اگر مائیکل لمب فارم میں نظر آ رہے ہیں تو نیوزی لینڈ کے برینڈم مکلم بھی زبردست فارم میں ہیں۔

اسی بارے میں