’کرکٹ مکمل زندگی نہیں صرف اہم حصہ ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دھونی میدان میں ہمیشہ سنجیدہ رہتے ہیں

بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان مہندر سنگھ دھونی کی مسکراہٹ مشہور ہے۔ جب وہ پریس کانفرنس میں آتے ہیں تو سب کو یہ بات معلوم ہوتی ہے کہ سخت سے سخت سوال پر بھی ان کے ماتھے پر بل نہیں آئیں گے بلکہ اپنے دلچسپ فقروں سے وہ ماحول کو خوشگوار بنا دیتے ہیں۔

مہندرسنگھ دھونی آئی پی ایل کرپشن میں اپنے اوپر لگنے والے الزامات کے بعد اگرچہ خاصے سنجیدہ نظر آتے ہیں لیکن ایسا بھی نہیں ہے کہ روایتی مسکراہٹ اور حاضر جوابی ساتھ چھوڑ دے ۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف جیت کے بعد جب دھونی سے سوال کیا گیا کہ بہت دنوں کے بعد آپ کے چہرے پر مسکراہٹ دیکھی جا رہی ہے تو وہ فوراً بولے کہ وہ ہروقت مسکراتے رہتے ہیں قطع نظر اس کے کہ ٹیم ہارے یا جیتے۔

دھونی کا کہنا ہے کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ کرکٹ ان کی زندگی کا ایک اہم حصہ ہے لیکن یہ مکمل زندگی نہیں ہے ظاہر ہے کہ جب آپ اچھا نہیں کرتے تو مایوسی ہوتی ہے۔ کرکٹ ایک کھیل ہے جس میں ایسا کئی بار ہوتا ہے کہ آپ ہارتے بھی ہیں۔

مہندرسنگھ دھونی اپنے باؤلرز کی کارکردگی پر خوش ہیں اور کہتے ہیں کہ یہ درست ہے کہ کنڈیشنز باؤلرز کے لیے مددگار ہیں لیکن منصوبہ بندی کے مطابق باؤلرز کو باؤلنگ کرنی پڑتی ہے کیونکہ اس مختصر دورانیے کی کرکٹ میں آپ کا سامنا جارحانہ انداز میں بیٹنگ کرنے والے کئی بیٹسمینوں سے ہے جن کے خلاف موثر حکمت عملی تیار کرنی پڑتی ہے اور اس پر عمل کرنا ہوتا ہے۔

اس ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں بھارت کے تقریباً تمام ہی صف اول کے بیٹسمین رنز کر رہے ہیں سوائے یوراج سنگھ کے جو دونوں میچوں میں ناکام رہے لیکن مہندرسنگھ دھونی کو امید ہے کہ یوراج سنگھ بھی جلد فارم میں آجائیں گے۔

دھونی کا کہنا ہے کہ یوراج سنگھ ٹی ٹوئنٹی کے اچھے بیٹسمین ہیں۔ چونکہ ون ڈے سے ڈراپ ہوئے تھے اب ٹیم میں آئے ہیں تو ہوسکتا ہے کہ ان پر پریشر ہو لیکن ایک اچھی اننگز ان کا اعتماد بحال کردے گی کیونکہ وہ ایک میچ ونر بیٹسمین ہیں۔

دھونی بھارتی ٹیم کی خراب فیلڈنگ کے بارے میں کہتے ہیں کہ پتہ نہیں اس کی وجہ تکنیک ہے یا ماحول ۔ دراصل باؤنڈری پر کھڑے فیلڈرز گیند کو صحیح طور پر دیکھ کر اسے کیچ کرنے میں دشواری محسوس کر رہے ہیں لیکن مسئلہ کچھ بھی ہو اسے دور کرنا ہوگا کیونکہ کسی بھی بڑے بیٹسمین کا کیچ ڈراپ ہونا ٹیم کے لیے نقصان دہ ہے ۔

واضح رہے کہ ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ میں بھارتی فیلڈرز نے کرس گیل کے دو آسان کیچز ڈراپ کیے تھے۔

دھونی دونوں میچوں میں مین آف دی میچ بننے والے لیگ سپنر امیت مشرا کے بارے میں کہتے ہیں کہ پاکستان کے خلاف میچ میں وہ کسی حد تک نروس تھے۔ انھوں نے مشرا سے کہا کہ آپ گیند کو ٹرن کرنے کے لیے پہچانے جاتے ہو۔ آپ کے پاس فلائٹ ہے لہذا آپ سیدھی سیدھی گیند کرنے کا مت سوچیں بلکہ گیند کو فلائٹ دیں۔ امید ہے کہ دو اچھی کارکردگی کے بعد ان کے اعتماد میں اضافہ ہوگا اور وہ اپنی خصوصیت کے مطابق باؤلنگ کریں گے جو ان کی فلائٹ ہے۔

اسی بارے میں