ورلڈ ٹی20 : جنوبی افریقہ جان کی بازی لگانے کے لیے تیار

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقہ کے درمیان گذشتہ برسوں کل 17 مقابلے ہوئے ہیں جن میں جنوبی افریقہ نے 13 میں جیت حاصل کی ہے

بنگلہ دیش میں جاری ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے گروپ میچوں میں پیر کو دو میچ کھیلے جا رہے ہیں۔ پہلا ميچ جنوبی افریقہ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ہے تو دوسرا میچ سری لنکا اور نیدرلینڈز کے درمیان کھیلا جائے گا۔

نیوزی لینڈ اپنا پہلا میچ جیت کر زیادہ پر اعتماد ہے جبکہ جنوبی افریقہ اپنا پہلا ميچ سری لنکا سے ہار چکی ہے اور اس میچ میں مبصرین کے مطابق وہ جان کی بازی لگا دے گی تاکہ اس کی امیدیں ٹورنامنٹ میں برقرار رہے۔

ہر چند کہ نیوزی لینڈ نے جیت ڈک ورتھ لوئس کی بنیاد پر حاصل کی تھی تاہم اس کے کھلاڑی فارم میں تصور کیے جاتے ہیں جبکہ جنوبی افریقہ سب سے متوازن ٹیم شمار کی جاتی ہے۔

گذشتہ دنوں دونوں ٹیموں کے درمیان ہونے والے دو طرفہ مقابلوں میں جنوبی افریقہ کا پلڑا بھاری رہا ہے تاہم جنوبی افریقہ اس میچ میں دباؤ میں رہے گی۔

جنوبی افریقہ کے لیے کپتان فاف ڈوپلیسی کی انجری پریشان کن ہے۔ ان کا اس میچ میں بھی کھیلنا مشوک نظر آر ہا ہے۔

دوسری جانب نیوزی لینڈ دوسرا میچ جیت کر سیمی فائنل کے لیے اپنی دعویداری مستحکم کرنا چاہے گی اس لیے وہ اپنی پوری قوت کے ساتھ اس میچ میں اترے گی۔

میچ میں لوگوں کی نظریں جہاں ہاشم آملہ اور اے بی ڈی ویليئرز پر ہوں گي وہیں کپتان برینڈن میکلم اور راس ٹیلر بھی شائقین کی نظریں رہیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption سری لنکا گذشتہ دنوں ایشیا کپ کا فاتح رہا ہے اور زبردست فارم میں ہے

یہ میچ ظہور احمد چوہدری سٹیڈیم چٹاگونگ میں مقامی وقت کے مطابق ساڑھے تین بجے شروع ہوگا۔

دوسرا میچ سری لنکا اور نیدر لینڈز کے درمیان اسی میدان پر شام ساڑھے سات بجے شروع ہوگا۔

ہر چند کہ سری لنکا کی ٹیم اپنا پہلا میچ جیت چکی ہے تاہم سری لنکا اور نیدرلینڈز کے درمیان کھیلے جانے والے دوسرے میچ میں دباؤ سری لنکا پر ہوگا کیونکہ نیدرلینڈز نئی ٹیم ہے اور وہ کبھی بھی حیران کن کھیل کا مظاہرہ کر سکتی ہیں۔

آئرلینڈ کے خلاف کوالیفائنگ میچ میں نیدرلینڈز کے بلے بازوں نے زبردست بیٹنگ کا مظاہرہ کیا تھا اور مطلوبہ 190 رنز کا ہدف چار وکٹ کے نقصان پر صرف 5۔13 اوورز میں حاصل کر لیا تھا۔

سری لنکا کے سامنے اگر بلے بازی اور بولنگ دونوں زبردست تجربہ ہے تو وہیں نیدرلینڈز کے پاس کچھ کر گزرنے کا حوصلہ ہے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ میچ ہرچند کہ دو برابر کی ٹیموں کے درمیان نہیں ہے تاہم یہ دلچسپی سے خالی نہیں ہوگا۔

اسی بارے میں