ہیلز کی سنچری، سنسنی خیز مقابلے کے بعد انگلینڈ فاتح

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption ہیلز نے 11 چوکے اور چھ چھکے لگائے اور 116 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے

بنگلہ دیش میں جاری ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ مقابلوں میں انگلش بلے باز ایلکس ہیلز نے ایک تاریخی اور ناقابلِ شکست اننگز کھیل کر اپنی ٹیم کو سری لنکا کے خلاف فتح سے ہمکنار کر دیا۔

انھوں نے 64 گیندوں پر 116 رن بنا کر 190 رنز کا مشکل ہدف حاصل کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔

تفصیلی سکور کارڈ

جمعرات کو کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ نے سری لنکا کے خلاف ٹاس جیت کر سری لنکا کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تو مہیلا جے وردھنے اور تلکارتنے دلشان نے زبردست بلے بازی کرتے ہوئے سری لنکا کو 189 رنز بنانے میں مدد دی۔

جے وردھنے 51 گیندوں پر 89 رن کی جارحانہ اننگز کھیل کر کیچ آؤٹ ہوئے۔ دوسری طرف دلشان نے بھی اچھی اننگز کھیلی اور 47 گیندوں پر 55 رنز بنائے۔ ان دونوں بلے بازوں نے دوسری وکٹ کے لیے 145 رنز کی شراکت قائم کی۔

اس اننگز میں انگلش فیلڈرز نے ناقص کارکردگی دکھائی اور کئی کیچ چھوڑے۔

190 رنز کے ہدف کے تعاقب میں انگلینڈ کو ابتدائی اوور میں ہی دو وکٹوں کا نقصان اٹھانا پڑا۔ تاہم اس موقع پر ایلکس ہیلز اور اوئن مورگن نے ٹیم کو سنبھالا اور تیسری وکٹ کے لیے 150 رنز کی شراکت قائم کر دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جے وردھنے 51 گیندوں پر 89 رن کی جارحانہ اننگز کھیل کر کیچ آؤٹ ہوئے

اس دوران مورگن نے نصف سنچری بھی مکمل کی۔ وہ 38 گیندوں پر سات چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 57 رنز بنا کر جب آؤٹ ہوئے تو انگلینڈ کو فتح کے لیے 28 گیندوں پر 38 رنز درکار تھے۔

مورگن کے پویلین لوٹنے کے باوجود ہیلز نے ہمت نہ ہاری اور جارحانہ بلے بازی جاری رکھی۔ انھوں نے 19ویں اوور میں چھکا لگا کر ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں اپنی پہلی سنچری مکمل کی۔

آخری اوور میں انگلینڈ کو فتح کے لیے چھ رن درکار تھے جو ہیلز نے ایک اور چھکا لگا کر حاصل کر لیے۔

انھوں نے اپنی اننگز میں 11 چوکے اور چھ چھکے لگائے اور 116 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ اس شاندار اننگز پر انھیں مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

میچ کے بعد بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ پچ بہت اچھی تھی اور انھوں نے اس کا بھر پور فائدہ اٹھایا۔

انھوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی میں سنچری بنانا آسان نہیں ہوتا اور اس سے قبل وہ کئی مرتبہ 90 رنز تو بنا پائے لیکن وہ کبھی سنچری نہیں بنا سکے۔

سری لنکا کی ٹیم کی یہ اس ٹورنامنٹ میں پہلی شکست اور انگلینڈ کی پہلی فتح تھی۔

اسی بارے میں