پیٹر مورز اِنگلینڈ ٹیم کے کوچ مقرر

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption مورز 2009 سے 2011 تک انگلینڈ ٹیم کی کوچنگ کے فرائض انجام دے چکے ہیں

ِانگلینڈ کرکٹ بورڈ کی انتظامیہ نے پیٹر مورز کو دوسری بار اِنگلش ٹیم کا کوچ مقرر کرنے کی تصدیق کی ہے۔

اس سے پہلے ٹیم کے کوچ گرانٹ فلاور تھے جنھوں نے ایشز میں آسٹریلیا کے ہاتھوں انگلینڈ ٹیم کی شکست کے بعد ِاستعفی دیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق گرانٹ فلاور مورز کو بہت سرہاتے ہیں اور جب ان سے نئے کوچ کے انتخاب کے لیے رائے لی گئی تو انھوں نے مورز کا نام تجویز کیا۔

پیٹر مورز کے علاوہ دیگر امیدواروں میں سابقہ اِنگلش کھلاڑی ایشلے جائیلز، مارک روبنسن اور سری لنکن ٹیم کے سابق آسٹریلین کوچ ٹریور بیلس بھی شامل تھے۔

جائیلز اس سے پہلے 2012 میں انگلینڈ کی ون ڈے ٹیم کے کوچ تھے اور ماہرین اِن کو پسندیدہ قرار دے رہے تھے۔

51 سالہ مورز، جو سسیکس اور ورسٹرشائر کی طرف سے وکٹ کیپنگ کر چکے ہیں، اسے پہلے 2009 سے 2011 تک انگلینڈ ٹیم کی کوچنگ کے فرائض انجام دے چکے ہیں۔ ماہرین ان کے اس عرصے کو انگلینڈ ٹیم کے بدقسمت ترین ادوار میں شامل کرتے ہیں۔

انھیں انگلش ٹیم کے سابقہ کپتان اور کھلاڑی کیون پیٹرسن کے ساتھ تنازعے اور ٹیم کی بھارت کے ہاتھوں شکست اور ناقص کارکردگی کی بنا پر برطرف کر دیاگیا تھا۔

یاد رہے کے جنوبی افریقہ میں پیدا ہونے والے پیٹرسن کو فروری میں ٹیم سی نکال دیا گیا تھا۔ اس وقت زیادہ تر ماہرین نے اسے کیون پیٹرسن کی کیرئر کا اختتام قرار دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کیون پیٹرسن کو فروری میں ٹیم سی خارج کردیا گیا تھا

مورز کے سابق دور میں انگلینڈ ٹیم نے 22 ٹیسٹ میچز کھیلے ، جس میں سی آٹھ میں انھیں فتع حاصل ہوئی، چھے میں ہار کا سامنا کرنا پڑا اور دیگر آٹھ کا نتیجہ ڈرا کی صورت میں نکلا۔

یاد رہے کے مورز 2011 میں اِنگلش کاؤنٹی چیمپیئن شپ جیتنے والی لنکاشائر ٹیم کی کوچ تھے، وہ پچھلے چھ سیزن سے لنکاشاہر کی کوچنگ کر رہے ہیں۔ مورز نے لنکاشائر کی کوچنگ اس وقت سنبھالی جب ٹیم بحران کا شکار تھی اور پچھلے 77 سال سے کاؤنٹی چیمپیئن شپ نہیں جیت پائی تھی۔

ایسی ہی صورتِ حال اس وقت اِنگلش ٹیم کی بھی نظر آ رہی ہے، جو گذشتہ ماہ بنگلہ دیش میں منعقد ہونے والی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کپ میں نیدرلینڈز کی ہاتھوں شکست کے بعد پہلے راؤنڈ کے اختتام سے قبل ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی تھی۔

مورز کو بہت سی مشکلات کا سامنا ہے ، وہ ایک ایسے وقت میں ٹیم کی ذمہ داری سنبھال رہے ہیں جب ٹیم کا مورال نیچے ہے اور ٹیم میں سلیکشن کے حوالے سے کوئی جامع پالیسی نظر نہیں آ رہی ہے۔ اس کے علاوہ ٹیم میں صرف تین سینیئر کھلاڑی موجود ہیں جو اس وقت فام میں نہیں ہیں۔

ایسے وقت مورز کی کوشش ہوگی کہ وہ ٹیم کو مستحکم کریں اور دوبارہ جیت کی راہ پر گامزن کریں۔

مورز فوری طور پر انگلش ون ڈے، ٹیسٹ اور ٹی ٹوئنٹی ٹیم کی ذمہ داری سنبھالیں گے۔

انگلینڈ کا اگلا میچ نو مئی کو سکاٹ لینڈ کے ساتھ ہے۔

اسی بارے میں