بوسٹن میراتھن میں ہلاک ہونے والوں کو خراجِ عقیدت

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption خیال رہے کہ 19 صدی کے آخر میں امریکہ کے شہر بوسٹن میں شروع ہونے والی یہ میراتھن ریسں دنیا کی بڑی چھ میراتھن ریس میں شامل ہے

امریکی ریاست میساچوسٹس کے دارالحکومت بوسٹن میں ہزاروں کھلاڑیوں نے گذشتہ برس میراتھن ریس کی اختتامی لائن کے قریب ہونے والے دو دھماکوں کے نتیجے میں ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد کو خراجِ عقیدت پیش کیا۔

بوسٹن میں پیر کو تقریباً 36 ہزار کھلاڑیوں نے ریس شروع ہونے سے پہلے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی۔

واضح رہے کہ بوسٹن میں گذشتہ برس میراتھن ریس کی اختتامی لائن کے قریب ہونے والے دو دھماکوں کے نتیجے میں تین افراد ہلاک اور 206 سے زائد افراد زخمی ہو گئے تھے۔

میراتھن ریس کے موقع پر حکام نے سخت سکیورٹی کا انتظام کیا ہے جس میں گراؤنڈ میں سفری تھیلوں اور دیگر بیگز لے جانے پر مکمل پابندی جبکہ چیک پوائنٹس پر جامع تلاشی لی جائے گی۔

بوسٹن میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار نِک برانٹ کا کہنا ہے کہ اس سے پہلے میراتھن ریس میں اتنی زیادہ سکیورٹی نہیں دیکھی گئی۔

ایک اندازے کے مطابق تقربیاً پانچ لاکھ افراد میراتھن ریس کو دیکھنے کے لیے آئیں گے۔

بوسٹن پولیس نے لوہے کی آٹھ ہزار رکاوٹیں قائم کی ہیں۔

دوسری جانب متعد افراد نے ’بوسٹن مضبوط‘ کے نعروں سے مزین ٹی شرٹس پہن رکھی ہیں۔

خیال رہے کہ 19 صدی کے آخر میں امریکہ کے شہر بوسٹن میں شروع ہونے والی یہ میراتھن ریسں دنیا کی بڑی چھ میراتھن ریس میں شامل ہے۔

اسی بارے میں