جب 11 کھلاڑی صرف تین رن بنا پائے

تصویر کے کاپی رائٹ Tom Shaw Getty Images
Image caption لینگ پورٹ کی پوری ٹیم 1913 میں گلیسٹن بری کے ساتھ میچ میں صفر کے اسکور پہ آوٹ ہوگئی تھی

ہالینڈ کے ہاتھوں شکست کھا کر ٹی ٹوئنٹی سے باہر ہونا ہو یا آسٹریلیا سے ایشِز میں 5-0 سے شکست، اِنگلنیڈ کے کرکٹ کھلاڑیوں کی کارکردگی حالیہ عرصے میں خاصی ناقص رہی ہے، البتہ اتوار کو جو کرکٹ کی دنیا میں ہوا ہے وہ اِنگلش نیشنل ٹیم شاید ہی کر پائے۔

انگلینڈ کی چیشائر لیگ کے تیسرے ڈویژن کے میچ میں ایک مقامی کلب کے 11 کھلاڑی صرف تین پر ڈھیر ہوگئے۔ حیرت کی بات یہ ہے کے ان تین رن میں سے دو رن ایکسٹرا تھے اور صرف ایک رن بیٹ سے بنایا گیا اور وہ بھی گیارہویں کھلاڑی کا بلا چلنے سے اتفاقاً چلنے سے بن گیا۔

یہ کارنامہ ورال نامی مقامی کلب نے اس وقت سر انجام دیا جب ان کی ٹیم ایک اور مقامی کلب ہاسلینگٹن کے ساتھ چیشائر لیگ کے تیسرے ڈویژن کا میچ کھیل رہی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پوری ٹیم دس اوور بمشکل کھیل پائی

ہاسلینگٹن 108 رن بنا کی آوٹ ہوئی جس کے تعاقب میں ورال کی چھ وکٹیں ایک لیگ بائی رن سکور کرنے کے بعد ساتویں اوور کے اختتام سے پہلے گر گئیں۔ جبکہ باقی چار کھلاڑی دسویں اوور سے پہلے پویلین واپس چلے گئے۔

ہاسلینگٹن کے بین اِسٹیڈ نے ایک رن دے کر چھ وکٹیں حاصل کئیں اور ٹام گلیڈ ہل نے بغیر کسی رن کے باقی چار کھلاڑیوں کو ڈریسنگ روم واپس بھیجا۔

حیران کن بات یہ ہے کے ورال کی ٹیم تین سکور کرنے کی وجہ سے عالمی ریکاڈ قائم نہیں کر پائی۔ یہ اعزاز انگلینلڈ کی ہی کلب لینگ پورٹ کے پاس ہے جس کی پوری ٹیم 1913 میں گلیسٹن بری کے ساتھ ایک میچ میں صفر کے سکور پہ آوٹ ہوگئی۔