کنیریا کے ساتھ کھیلنے والے کرکٹروں پر جرمانہ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption دانش کنیریا پر سپاٹ فکسنگ میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کی پاداش میں آئی سی سی نے تاحیات پابندی عائد کر رکھی ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان پانچ کرکٹروں پر پانچ پانچ لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا ہے جنھوں نے سپاٹ فکسنگ کے الزام میں تاحیات پابندی کا شکار دانش کنیریا کے ساتھ ہیوسٹن میں ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ میں حصہ لیا تھا۔

جن کرکٹروں پر جرمانہ عائد کیا گیا ہے ان میں عبدالرزاق، وہاب ریاض، ناصرجمشید، شاہ زیب حسن اور فواد عالم شامل ہیں۔

’جرم نہیں کیا تو معافی کیسی؟‘ دانش کنیریا

غور طلب بات یہ ہے کہ 11 سے 13 اپریل تک ہونے والے اس ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے ڈائریکٹر مارکیٹنگ بدر رفاعی بھی موجود تھے لیکن انھیں صرف متنبہ کیا گیا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ ان کرکٹروں نے ٹورنامنٹ میں حصہ لینے کے لیے اجازت نہیں لی تھی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس معاملے کی تحقیقات کے لیے تین رکنی کمیٹی قائم کی تھی جس نے ان کرکٹروں کے بیانات لینے کے بعد اپنی رپورٹ چیئرمین پی سی بی کو دے دی تھی جس کے بعد یہ معاملہ پی سی بی کی انٹیگریٹی کمیٹی کے سپرد کر دیاگیا تھا۔

واضح رہے کہ آئی سی سی کے قواعد وضوابط کے تحت کوئی بھی کرکٹر یا عہدیدار کسی بھی ایسے کرکٹر کے ساتھ کلب کرکٹ تک نہیں کھیل سکتا اور رابطہ نہیں رکھ سکتا جو کرپشن میں ملوث ہو۔

دانش کنیریا پر سپاٹ فکسنگ میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کی پاداش میں آئی سی سی نے تاحیات پابندی عائد کر رکھی ہے۔

اس فیصلے کی رو سے کنیریا دنیا بھر میں کسی بھی قسم کی کلب کرکٹ بھی نہیں کھیل سکتے جو اس ملک کے کرکٹ بورڈ فیڈریشن یا ایسوسی ایشن کی منظور شدہ ہو۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے دانش کنیریا کو بھی طلب کیا تھا لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔

اسی بارے میں